پاکستان کی قومی کرکٹ ٹیم کے بیٹسمین عمر اکمل پر پابندی ڈیڑھ سال کر دی گئی

پاکستان کی قومی کرکٹ ٹیم کے بیٹسمین عمر اکمل کی تین سالہ پابندی کے خلاف اپیل پر ایڈجوڈیکیٹر نے فیصلہ سنا دیا ہے۔ کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی پر سنائی گئی پابندی کی سزا کو کم کر کے ڈیڑھ  سال کر دیا گیا ہے۔ عمر اکمل پر پابندی کا فیصلہ 27 اپریل کو سنایا گیا تھا۔  عمر اکمل کو پاکستان کرکٹ بورڈ نے اینٹی کرپشن کوڈ کے آرٹیکل کی دو مرتبہ خلاف ورزی پر چارج کیا تھا
بدھ کو فیصلہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے مقرر کردہ ایڈجوڈیکیٹر جسٹس ریٹائرڈ فقیر محمد کھوکھر نے سنایا۔ عمر اکمل اگست 2021 تک کرکٹ نہیں کھیل سکیں گے۔ 
۔
پی سی بی اینٹی کرپشن کوڈ کے آرٹیکل 2.4.4 کا مطلب کسی بھی فرد کی جانب سے کرپشن کی پیشکش کے بارے میں کرکٹ بورڈ کے ویجلنس اینڈ سیکورٹی ڈیپارٹمنٹ کو بغیر کسی غیر ضروری تاخیر کے آگاہ نہیں کرنا ہے۔
پابندی کا فیصلہ ‏پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے جاری ہونے والی پریس ریلیز کے ذریعے میڈیا کو جاری کیا گیا تھا جس کے مطابق ‘چیئرمین ڈسپلنری پینل جسٹس ریٹائرڈ فضلِ میراں چوہان نے فیصلہ سناتے ہوئے عمر اکمل پر 3 سال کے لیے ہر قسم کی کرکٹ کھیلنے پر پابندی عائد کی۔‘