سوات ایکسپریس وے اور چکدرہ ٹو دیر موٹروے دونوں الگ الگ منصوبے ہیں- معاون خصوصی برائے اطلاعات و بلدیات

ویب ڈیسک(پشاور): وزیراعلی خیبرپختونخوا کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و بلدیات کامران بنگش کا پریس بریفنگ،دیر کے ممبران صوبائی و قومی اسمبلی کا بھی پریس بریفنگ میں شرکت

کامران بنگش کا کہنا تھا کہ سوات موٹروے فیز ٹو کو کچھ لوگ متنازعہ بنا رہے ہیں،دیر کے عوام کو پیغام دینا چاہتے ہیں کہ کسی کے ساتھ بھی ظلم نہیں کی جائے گی۔جنوبی اضلاع اور ملاکنڈ ڈویژن کی ترقی اولین ترجیح ہے۔سوات موٹروے فیز ٹو کے متعلق منفی پراپیگنڈا کیا جا رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے چکدرہ ٹو دیر موٹروے کی منظوری بہت پہلے دی تھی۔ وزیراعلی نے آج اصولی طور پر چکدرہ ٹو دیر موٹروے فیزیبلٹی کی منظوری دے دی۔ تین مہینے کے اندر اندر فیزیبلٹی رپورٹ پیش کی جائے گی۔مسلم لیگ ن نے دیر کے عوام کے ساتھ چکدرہ ٹو دیر موٹروے کے نام پر ڈرامہ کیا۔

کامران بنگش کا کہنا تھا کہ چکدرہ ٹو چترال موجودہ روڈ کی توسیع و بحالی پر بھی کام شروع کیا جائے گا۔ نیشنل ہائی وے اتھارٹی 230 کلومیٹر روڈ کی بحالی کا کام مکمل کرے گی۔چکدرہ ٹو دیر موٹروے کا سوات ایکسپریس وے کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔سوات ایکسپریس وے اور چکدرہ ٹو دیر موٹروے دونوں الگ الگ منصوبے ہیں۔ہماری حکومت نے دیر کے لیے مواصلات کے بڑے پراجیکٹس کی منظوری دی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایگزم بینک کے ساتھ مل کر 230 کلومیٹر روڈ کو بحال کر رہے ہیں۔عوام کسی بھی منفی پراپیگنڈا میں نہ آئیں۔ کسی بھی علاقے کو پسماندہ نہیں رکھا جائے گا۔وزیراعلی نے منتخب نمائندگان کے ساتھ مل کر چکدرہ ٹو دیر موٹروے کی اصولی منظوری دی ہے۔ مذکورہ منصوبوں سے دیر میں ترقی کا ایک نیا دور شروع ہوگا۔