نزلے سے بچنے کے5 طریقے

ایک سروے سے پتہ چلا ہے کہ ہرانسان کو سال میں کم از کم دو مرتبہ نزلہ ضرور ہوتا ہے۔اس کیفیت سے کیسے نمٹا جائے اس کے لئے یہ آرٹیکل ملاحظہ فرمائیے۔سروے کے مطابق بڑوں کو سال میں 2 سے4مرتبہ اور بچوں میں نزلے کی شکایت 6سے10مرتبہ تک ہو سکتی ہے۔جن گھروں میں بچے زیادہ ہوتے ہیں وہاں نزلہ ایک سے دوسرے کو لگنے کے زیادہ امکانات ہوتے ہیں ۔20سے30سال کی عمر کی خواتین میں یہ تناسب8سے10مرتبہ ہوسکتا ہے۔نزلے کا تعلق کسی خاص موسم یا آب وہوا سے نہیں ہوتا بلکہ یہ سال کے کسی بھی حصے میں ہوسکتا ہے۔صحت کے ادارے کے مطابق یہ وائرس ان گھروں میں زیادہ تیزی سے پھیلتا ہے جن میں خشک ہوا ہوتی ہے۔باہر کی آب وہوا اور موسم پر وائرس کا اتنا زیادہ اثر نہیں ہوتا ۔
عام نزلہ وائرس کی وجہ سے ہوتا ہے اور اس پر کوئی بھی دوا اثر نہیں کرتی۔دوا کے بجائے آپ کا جسم اس وائرس سے مقابلہ کرتا ہے۔اس لئے بیماری کو ختم کرنے کی کوشش کرنے کے بجائے اس کی علامات پر قابو پانے کی کوشش کرنی چاہئے۔بند ناک،گلے میں خراش ،کھانسی،سینہ جکڑنا اور سر درد یہ سب نزلے کی علامات ہیں ۔یہ صورت حال خطرناک تو نہیں لیکن پریشان کن ضرور ہوتی ہے۔پھر بھی وائرس کا یہ دورانیہ برداشت تو کرنا ہی پڑتا ہے۔اس کی علامات کو کم کرنے کے لئے گھریلو تدابیر کا سہارا لیا جاسکتا ہے۔سر درد اور کھانسی کو کم کرنے کے لئے دوائوں اور سیرپ کا استعمال بھی کیا جاسکتا ہے۔اس کے علاوہ نیچے موجود گھریلو تدابیر بھی علامات کو کم کرنے میں مددگار ہوں گی ۔

آرام کریں:

کام سے چھٹی لیں اور آرام کریں ۔آپ کا جسم وائرس کا مقابلہ کرتا ہے اور آرام کرنے سے ذہنی دبائو کم ہوتا ہے اور جسم زیادہ موثر انداز میں مرض کا مقابلہ کرتا ہے۔

لکوئڈ زیادہ پیئیں:

بخار،سینے کی جکڑن اور قوت مدافعت میں کمی سے جسم میں پانی کی کمی کا خطرہ بڑھ جاتا ہے ۔اس لئے جسم کوپانی کی کمی سے بچانے کے لئے پانی،سوپ اور جوس پیتے رہنا چاہئے۔

روزانہ غرارے کریں:

نزلے کی پہلی علامت گلے میںخراش ہوتی ہے۔نمک ملے نیم گرم پانی کے غرارے گلے کی خراش اور سوزش کو کم کرتے ہیں ۔اس کے علاوہ گلے کی خشک اور بلغم کو بھی ختم کرتے ہیں ۔صرف آدھا چائے کا چمچ نمک پانی میں ملائیں کیونکہ اس سے زیادہ نمک صحت کے دوسرے مسائل پیدا کرسکتا ہے۔