امریکا نے خلیج عرب کی فضائی حدود پر فلائٹ آپریشن بحال کردیا

امریکا کی وفاقی فضائی انتظامیہ کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیاہے کہ خلیج عرب اور خلیج عمان کی فضائی حدود میں مسافر طیاروں کی آمد ورفت دوبارہ شروع کردی ہے۔ خیال رہے کہ پانچ ہفتے قبل ایران اور امریکا کے درمیان کشیدگی پیدا ہونے کے بعد امریکا نے خلیج عرب اور خلیج عمان میں مسافر طیاروں کی آمد ورفت روک دی تھی۔

امریکی فیڈرل ایو ایشن اتھارٹی کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے خلیج عرب اور خلیج عمان کی فضائی حدود میں فلائٹ آپریشن کی بحال ایران کی طرف سے فوجی الرٹ میں کمی کے بعد کی گئی ہے۔ یہ فیصلہ اس لیے کیا گیا کیونکہ اب خلیج عرب کی فضاء میں امریکا کے سول طیاروں کو زیادہ خطرہ نہیں رہا ہے۔

خیال رہے کہ امریکا کی وفاقی ایو ایشن انتظامیہ نے امریکی فضائی کمپنیوں‌کو جنوری کے اوائل میں امریکا اور ایران کے درمیان پیدا ہونے والی کشیدگی کے بعد خلیج عرب کے بیشتر مقامات کی فضائی حدود استعمال کرنے سے روک دیا تھا۔

اگرچہ خلیج عرب کی فضائی حدود کے استعمال میں ایران کی طرف سے براہ راست خطرہ نہیں تھا تاہم احتیاطی تدابیر کے تحت بالخصوص دونوں ملکوں میں کسی مسلح تصادم کے اندیشے کے پیش نظر امریکی فضائی کمپنیوں کو خلیج عرب کی فضائی حدود کے استعمال سے روکا گیا تھا۔ خلیج عرب اور خلیج عمان میں کویت، سعودی عرب، بحرین، متحدہ عرب امارات اور سلطنت عمان کے علاقے شامل ہیں۔