نوازشریف علاج کروا کے ہی آ سکیں گے- پاکستان مسلم لیگ (ن)

لاہور : ایک پریس کانفرنس میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائدین کا کہنا تھا کہ نوازشریف جیل سے نہیں گھبراتے،نوازشریف مریم نواز کے ساتھ لندن سے آ کر جیل گئے. نوازشریف کو جیل کا خوف ہوتا تو لندن میں اس وقت بھی رک سکتے تھے جب اہلیہ بیمار تھیں اور کہا گیا تھا رک جائیں کیس ختم ہو جائیں گے لیکن وہ آئے واپس.

لیگی قائدین کا مزید کہنا تھا کہ نواز شریف صاحب کی میڈیکل رپورٹس بنانے والے سرکاری ڈاکٹروں کے بنک اکاؤنٹ چیک کیئے گئے ہیں ،وزارت داخلہ نے گند ڈالنے کے لیے اداروں کو استعمال کیا ، وزیراعظم غلط بیانی پر عوام سے مستعفی ہوں یا معافی مانگیں.

انہوں نے پریس کانفرنس میں مزید کہا کہ میاں صاحب کی سرجری اس وجہ سے تین مرتبہ مؤخر کی گئی کہ انکی صحت کا مستحکم ہونا بہت ضروری ہے اور یہ ڈاکٹرز کا فیصلہ ہے کہ صحت میں استحکام لائے بغیر سرجری کرنا ممکن نہیں.

اس حکومت نے ریاست کو بروکن ہاؤس بنادیا ہے.ریاست جس کی ترجمان حکومت ہوا کرتی ہے وہ بارہا غلط بیانی کررہی ہے اور کرتی چلی جارہی ہے.عوام کا اس حکومت پر یقین ختم ہوچکا ہے ، پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائدین کی پریس بریفنگ.