کابل میں پاکستانی سفارت خانے کا ویزہ سیکشن بند کر دیا گیا

کابل: سفارت خانے کے کلرک کا کرونا وائرس سے متاثر ہونے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے ویزہ سیکشن کو کلیر قرار دیئے جانے کے بعد کھولا جائے گا. تفصیلات کے مطابق دنیا بھر میں کرونا وائرس کی وبا پھیلنے کے بعد روز مرہ کے معاملات متاثر ہورہے ہیں. چین کے شہر ووہان سے اٹھنے والا خطرناک وائرس اب دنیا کے 106 ممالک میں پھیل چکا ہے. جس نے ترقی یافتہ ممالک کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے. صوبہ سندھ کے شہر کراچی میں ہی صرف 15 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے. تاہم اب بتایا گیا ہے کہ کابل میں پاکستانی سفارتخانے کے کرونا وائرس سے متاثر ہونے کا خدشہ ہے. جس کے بعد سفارتخانے کا ویزہ سیکشن بند کر دیا گیا. حکام کی جانب سے کہا گیا ہے کہ افغانستان میں کرونا وائرس کی تشخیص کے لئے سہولیات موجود نہیں ہیں. کہا جا رہا ہے کہ ویزہ سیکیشن کے ملازم کو طرنطینہ میں رکھا جائے گا. حکام کا کہنا ہے کہ ویزہ سیکشن کو کرونا وائرس سے کلیئر ہونے کے بعد کھول دیا جائے گا. یہ بات بھی قابل غور رہے کہ گزشتہ روز کرونا وائرس نے چین کے بعد ایران کو بڑے پیمانے پر متاثر کیا ہے جس کے بعد یہ وائرس زائرین کی صورت میں دیگر ممالک میں منتقل ہو رہا ہے. ایران سے پاکستان آنے والے زائرین میں بھی کرونا وائر کی تصدیق ہو چکی ہے. جس کے بعد یہ افغانستان میں بھی پھیل گیا ہے. ایران میں ایک دن میں کرونا وائرس کا شکار 54 افراد زندگی کی بازی ہار گئے تھے ترجمان وزارت صحت کی جانب سے لائیو پریس کانفرنس کے دوران کہا گیا ہے کہ ایران میں کرونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد میں 18 فیصد اضافہ ہوا ہے جبکہ متاثرہ افراد میں بھی 12 فیصد اضافہ ہو چکا. ایران چین کے بعد وہ ملک ہے جس کو کرونا وائرس نے سب سے زیادہ متاثرہ کیا. یہاں کرونا وائرس کے متاثرہ افراد کی تعداد میں تیزی کے ساتھ اضافہ ہو رہا ہے اور اب تک 8 ہزار 600 افراد خطرناک وائرس سے متاثر ہو چکے ہیں.