حکومت کادوہفتوں کیلئےلاک ڈاؤن جاری رکھنےکافیصلہ

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت قومی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں اھم فیصلے، اجلاس کے بعد وفاقی وزیراسدعمر کی میڈیا بریفنگ. اسدعمر کا کہنا تھا کہ مشترکہ طورپرفیصلہ ہواکہ یکم سے14اپریل تک موجودہ صورتحال کوجاری رکھاجائیگا.این سی سی میٹنگ میں فیصلہ کریں گے کہ بندشیں کم کی جائیں یابڑھائی جائیں. وہ سروسزاورصنعتیں جوبنیادی ضرورت کی چیزیں بناتی ہیں،کھلی رہیں گی

اسدعمر کا مزید کہنا تھا کہ کھانے پینےکی اشیا،ادویات کی صنعتوں کومکمل طورپرکھلارکھنا بہت ضروری ہے.گڈزٹرانسپورٹ پرکوئی بندش نہیں ہوگی،ایک آدھ شکایات آرہی ہیں.جبکے تمام فریقین نےیقین دہانی کرائی ہےکہ این سی سی کےفیصلے پرعملدرآمدیقینی بنائیں گے.

وفاقی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ 4اپریل کوایک پروازچلےگی،تمام پروازیں ایک ساتھ بحال نہیں کی جائیں گی.جتنےصوبوں کےوفاق سےموثرروابط ہوں گےاتنےبہترطریقےسےمددکرپائیں گے.ماضی میں بیرون ملک سےآنےوالوں کی وجہ سےکوروناپھیلاہے.ہم نےکوروناکوپھیلنےسے روکنا ہے.اسدعمر کا مزید کہنا تھا کہوزیراعظم نےتعمیراتی شعبےکیلئےگائیڈلائنز دینےکی ہدایت کی ہے.