اقراء فروغ تعلیم سکیم میں کروڑوں کی کرپشن

ویب ڈیسک (پشاور): نیب کے مطابق پی آئی ٹی ایجوکیشن فاوٴنڈیشن کی اپنی انکوائری کے بعد اب دوبارہ محکمہ تعلیم کی انکوائری کا فیصلہ، انکوائری کے بعد انکوائری، قومی خزانے کے اربوں روپے ہڑپنے والوں سے 3 سال میں ایک پائی تک ریکور نہ ہوسکی۔
دستاویزات کے مطابق 1 ارب 8 کروڑ 80 لاکھ روپے کی ریکوری صوبے کے 116 سکولوں سے ہونے تھی، مختلف اضلاع کے سکولوں میں کم طلبہ کو ذیادہ ظاہر کرنے اور گھوسٹ سکول کی مد میں قومی خزانے کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچایا گیا تھا، 3 سال بعد بھی سکولوں سے ریکوری نہ ہوسکی، صرف مانسہرہ کے 51 پشاور 32، کوہاٹ 9، سوات 24 سکولوں سے 1 ارب 8 کروڑ کی ریکوری ہونے تھی۔
محکمہ تعلیم نے 3 ممبران پر مشتمل نئی انکوائری کمیٹی تشکیل دے کر دوبارہ تحقیقات کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے، 6 اضلاع میں قائم سکولوں سے 21 کروڑ 7 لاکھ کی ریکوری ہونی ہیں۔