احتساب عدالت نے شہباز شریف کی بیٹی کے خلاف اشتہاری قرار دینے کی کارروائی کا آغاز

ویب ڈیسک(لاہور)منی لانڈرنگ کیس میں شہباز شریف فیملی کے لیے ایک اور بری خبر آگئی ہے ۔احتساب عدالت نے شہباز شریف کی بیٹی رابعہ عمران کے خلاف اشتہاری قرار دینے کی کارروائی کا آغاز کردیا ہے۔
دوسری جانب احتساب عدالت لاہور میں شہباز شریف خاندان کے اثاثہ جات منجمند کرنے کے خلاف دائر اعتراضات پر سماعت ہوئی ہے۔ شہباز شریف کے وکیل امجد پرویز کے جونئیر وکیل عدالت میں پیش ہوئے۔نیب کا کہنا تھا کے شہباز شریف فیملی کے خلاف منی لانڈرنگ اور غیر قانونی اثاثوں کے الزامات پر تفتیش جاری ہے۔
تفتیشی افسر نے شہباز شریف کی بیٹی کے گھر کے باہر اور عدالت کے بعد نوٹس آویزاں کردیے اور ان کا کہنا ہے کہ عدالتی حکم کے باوجود پیش نہ ہونے پر رابعہ عمران کے خلاف اشتہاری کارروائی کا آغاز کیا گیاہے۔ اور ان کے خلاف کارروائی احتساب عدالت کے ایڈمن جج جواد الحسن نے کیا ہے۔
شہباز شریف نے اپنی بیویوں کے نام پر جائیدادیں بنا رکھی ہیں ۔ جائیدادوں کے متعلق بار بار جواب مانگا گیا لیکن ان کی فیملی جائیدادوں کے ذرائع بتانے میں ناکام رہی، منی لانڈرنگ ایکٹ اور فنانس ایکٹ کے مطابق جائیدادوں کے ذرائع بتانا لازم ہے، اثاثہ جات قانون کے مطابق شہباز شریف سمیت دیگر کے اثاثہ جات قانون کے مطابق منجمدکئے گئے ہیں۔
شہبازشریف کے وکیل نے کہا کہ انویسٹی گیشن کے دوران اثاثے منجمد نہیں کئے جاسکتے ہیں۔ عدالت شہباز شریف اور سلمان شہباز سمیت دیگر کے اثاثے منجمد کرنے کے حکم پر نظرثانی کرے۔ عدالت نے شہباز شریف کے وکلا کو دلائل کے لئے 7 نومبر کو طلب کرلیاہے۔