چھوٹی اور درمیانے درجے کی صنعتوں کو سہولت فراہم کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔وزیراعظم

ویب ڈیسک (اسلام آباد): وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ صنعتی عمل کی بحالی سے نہ صرف معاشی عمل میں تیزی آئے گی بلکہ نوجوانوں کے لیے نوکریوں کے مواقع اور دولت کی پیداوار کو یقینی بنانے میں مدد ملے گی، یہ بات انہوں نے گورنر سندھ عمران اسمعیل اور معروف تاجر عقیل کریم ڈھیڈی سے وزیراعظم ہاؤس میں ملاقات کے دوران کی، رپورٹ کے مطابق وزیراعظم کو بتایا گیا کہ گزشتہ ماہ ملک میں اسٹیل ، سیمنٹ ، آٹوموبائل اور موٹرسائیکلوں کی ریکارڈ فروخت دیکھنے میں آئی ہے، جس سے ظاہرہوتا ہے کہ معیشت میں بہتری آرہی ہے،

وزیراعظم ہاؤس کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق عمران خان کا کہنا تھا کہ ملک میں صنعتی عمل کی بحالی خصوصاً چھوٹی اور درمیانے درجے کی صنعتوں کو ہر ممکنہ سہولت فراہم کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے، اعلامیے کے مطابق ملاقات میں عقیل کریم ڈھیڈی نے صنعتوں کے فروغ کے حوالے سے وزیرِاعظم کی ذاتی دلچسپی پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ کاروبار اور صنعتی عمل کے فروغ کے حوالے سے حکومتی کوششوں اور پالیسیوں کے نتیجے میں کاروباری برادری کا اعتماد بحال ہوا ہے، ان کا کہنا تھا کہ ملک میں کورونا کی صورتحال اور صوبہ سندھ خصوصاً کراچی میں بارش سے ہونے والے نقصانات کے بعد کاروباری سرگرمیاں بحال کرنے میں مدد ملی ہے، انہوں نے کہا کہ کاروباری برادری کی سہولت کاری اور چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروبار کی سرپرستی سے ملکی معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے، عقیل کریم ڈھیڈی نے کہا کہ ستمبر میں اسٹیل کی کھپت 62 فیصد تھی،

جو اس سے ایک ماہ قبل 42 فیصد ریکارڈ کی گئی تھی، انہوں نے کہا کہ اسی طرح 2 لاکھ ٹن سیمنٹ استعمال کیا گیا جو ایک اور ریکارڈ ہے، انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کو بتایا گیا کہ حکومت کی پالیسیوں کی وجہ سے زراعت، ٹیکسٹائل، یوریا اور فوڈ سیکٹر میں بھی اضافے کا رجحان دیکھا گیا، ان کا کہنا تھا کہ حالیہ دنوں میں چاول اور کپڑے کی اشیاء جیسے تولیے، موزوں اور بیڈ شیٹ کی برآمد میں اضافہ ہوا ہے، عقیل کریم ڈھیڈی نے کہا کہ وزیراعظم کو بتایا گیا کہ اگر گندم، چاول اور دیگر فصلیں زیادہ قیمت پر فروخت کی گئیں تو اس کا حتمی فائدہ کسانوں کو ہوگا، دوسری طرف 50 کلو کی یوریا کی بوری کی قیمت 2100 روپے سے کم ہو کر 1600 روپے ہوگئی ہے، جس سے کسانوں کو ایک بار پھر فائدہ ہوا، اس ملاقات میں اس بات پر بھی توجہ دی گئی کہ ایک چھوٹے سے دکاندار کو کس طرح سہولت دی جائے اور اس مقصد کے لیے ایک ایسی پالیسی مرتب کی جارہی ہے،

جس پر پیر کو ہونے والی ایک ملاقات میں وزیر اعظم سے تبادلہ خیال کیا جائے گا، افغان اسپیکر اسمبلی کی وزیر اعظم سے ملاقات کی، افغانستان کی قومی اسمبلی ولسی جرگہ کے اسپیکر میر رحمٰن رحمانی نے وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کی اور ان سے دوطرفہ تعلقات، افغان امن اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا، ملاقات میں قومی اسمبلی کے اسپیکر اسد قیصر بھی موجود تھے، میر رحمٰن رحمانی اس سے قبل اسپیکر قیصر کی دعوت پر 17 رکنی پارلیمانی وفد کے ہمراہ ملک کے 6 روزہ دورے پر آئے تھے،

اقوام متحدہ کی 75 ویں سالگرہ کے موقع پر وزیراعظم خان نے عالمی ادارے پر زور دیا کہ وہ کشمیریوں کو بھارتی قبضے سے آزاد کرنے کے مسئلے کو حل کرے،انہوں نے اپنے پیغام میں کہا کہ اقوام متحدہ کا 75 ویں سالگرہ کا دن یاد دہانی بھی ہے کہ جموں و کشمیر تنازع سات دہائیوں سے زیادہ عرصے سے اقوام متحدہ کے ایجنڈے پر رہنے کے باوجود حل طلب ہے اور جموں وکشمیر کے لوگ اقوام متحدہ کی جانب ان سے کیے گئے عہد کی تکمیل کے منتظر ہیں۔