اسلام آباد:جنسی تشدد اور ریپ کے مقدمات کی تیز ترین سماعت کیلئے خصوصی عدالتوں کا قیام

ویب ڈیسک (اسلام آباد): جنسی تشدد اور ریپ کے مقدمات کی تیز ترین سماعت کیلئے خصوصی عدالتوں کا قیام، متاثرین کو تیز ترین انصاف فراہم کرنے میں مدد ملے گی، وزیراعظم عمران خان کے وژن اور وفاقی وزیر قانون ڈاکٹر فروغ نسیم کی قیادت میں وزارت قانون و انصاف نے جنسی تشدد اور عصمت دری کا شکار افراد کے مقدمات کی تیز ترین سماعت کے لئے خصوصی عدالتوں کا قیام کر دیا ہے جس کا مقصد متاثرین کو تیز رفتار کے ساتھ انصاف فراہم کرنا ہے۔

قانون وانصاف کی پارلیمانی سیکرٹری اور خصوصی کمیٹی کی چیئرپرسن بیرسٹر ملائیکہ بخاری نے ”اینٹی ریپ آرڈیننس 2020“کے تحت خصوصی عدالتوں کے قیام میں کلیدی کردار ادا کیا ہے۔

اس حوالے سے وزارت اور خصوصی کمیٹی کے ارکان نے بڑی محنت سے کام کیا ہے۔ خصوصی عدالتوں کا قیام اہم پیشرفت ہے جس کے ذریعے زیادتی اور جنسی جرائم کے متاثرین کو انسانی اور صنفی بنیادوں پر تیز رفتار انصاف کی فراہمی ممکن ہو سکے گی، ترجمان وزارت قانون و انصاف کا کہنا ہے کہ خصوصی عدالتیں جدید خطوط پر استوار ہوں گی جہاں آڈیو، ویڈیو ریکارڈنگ اور ویڈیو لنک کی سہولیات بھی میسر ہوں گی، خصوصی عدالتوں کو جدید سہولیات کی فراہمی کا مقصد جنسی زیادتی کے مقدمات کی سماعت کے دوران متاثرین بالخصوص خواتین اور بچوں کو عدالتی کمرے میں ایسا ماحول فراہم کرنا ہے جہاں وہ خود کو مکمل طورپر محفوظ سمجھیں۔