لنڈی کوتل: بارڈر بندش کے خلاف دھرنے شرکاء کا طورخم سرحد زیرو پوائنٹ کی طرف پیش قدمی

ویب ڈیسک (لنڈی کوتل): بارڈر بندش کے خلاف دھرنے شرکاء کا طورخم سرحد زیرو پوائنٹ کی طرف پیش قدمی، مظاہرین کا طورخم سرحد پہنچ کر بارڈر پر احتجاجی دھرنا، نوجوان، مزدور بارڈر بندش کے خلاف آج چوتھے روز بھی سراپا احتجاج ہے،
دھرنے میں سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں، قومی مشران اور نوجوانوں کی کثیر تعداد میں شرکت، دھرنے میں ٹرانسپورٹرز نے پہہ جام ہڑتال شروع کرنے کا اعلان کردیا، مظاہرین نے کالے جھنڈے اٹھائے بارڈر بندش نامنظور نامنظور کے نعرے، مظاہرین کا کہنا ہے کہ طورخم بارڈر کی مزید بندش کسی صورت قبول نہیں، طورخم بارڈر بندش سے ہزاروں قبائل بے روزگار ہو گئے، کورونا شرح انتہائی کم ہے، بارڈر بند رکھنا ظلم و زیادتی ہے، بارڈر بندش دو طرفہ تجارت بری طرح متاثر ہوئی ہے، طورخم سرحد کے علاوہ ملک کی تمام سرحدیں کھلی ہیں، بارڈر بندش مسافروں اور مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے، بارڈر بند ہونے سے ٹرانسپورٹ کا پہہ بھی بند ہے، حکومت قبائلی عوام کو ریلیف دینے میں مکمل طور پر ناکام ہے، حکومت نے عوام کو روزگار دینے کی بجائے روزگار چھین لیا ہے، بارڈر کو جلد ہر قسم آمدورفت کے لیے کھول دیا جائے، طورخم سرحد کھولا نہ دیا گیا تو سرحد پر دھرنا دینگے، بارڈر حکام کے مطابق طورخم سرحد کورونا وائرس کے باعث پیدل آمدورفت کے لیے بند ہے۔