دھرنا

لنڈی کوتل: مکان کے اندر دھماکے کے واقعے خلاف احتجاجی دھرنا آج دوسرے روز بھی جاری ہے

ویب ڈیسک(لنڈی کوتل): مکان کے اندر دھماکے کے واقعے خلاف لواحقین،خیبر سیاسی اتحاد اور قومی مشران کا احتجاجی دھرنا آج دوسرے روز بھی جاری ہے، مظاہرین نے چاروازگئی کے مقام پر ایک بار پھر پاک افغان شاہراہ ہر قسم آمدورفت کے لیے بند کر دیا، شاہراہ بند ہونے کے باعث افغانستان کے لیے سپلائی آج دوسرے روز بھی معطل رہی،دھرنا میں لواحقین، ایم پی اے شفیق شیر، خیبر سیاسی اتحاد کے رہنما اور مقامی لوگوں کی کثیر تعداد میں شرکت۔

مظاہرین کا کہنا ہے کہ واقعے میں متاثرہ خاندان کو انصاف کی فراہمی تک احتجاجی دھرنا جاری رہیگا، متاثرہ خاندان کو فوری انصاف فراہم کی جائے، واقعے کی تحقیقات کرکے جوڈیشل انکوائری مقرر کی جائے، دھماکے میں جاں بحق 05 افراد کو شہید پکیج دیا جائے،

مظاہرین کا یہ بھی کہنا ہے مائن کو پہاڑوں علاقوں میں چھوڑنا افسوسناک ہے،مطالبات ماننے تک احتجاجی دھرنا جاری رکھیں گے،پاک افغان شاہراہ ہر قسم آمدورفت کے لیے بند رہیگی،

دوسری طرف حکام کا کہنا ہے واقعے کی تحقیقات جاری ہے، متاثرہ خاندان کے شہداء پکیج کے حوالے سے اعلیٰ حکام کو آگاہ کیا گیا ہے، متاثرہ خاندان کے ساتھ ہر قسم تعاون کرینگے۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز مکان کے اندر اندر پراسرار طور پر دھماکے میں خاتون بچوں سمیت 05 افراد جاں بحق ہوئے تھے