PRESS CONFRENCE

ویکسین نہ لگوانےوالوں کیخلاف سخت پابندیاں لگانےکافیصلہ

ویب ڈیسک (پشاور)خیبر پختونخواحکومت نےکورونا ویکسین لگوانےکارجحان بڑھانے کےلیے سخت پابندیاں لگانے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

وزیرصحت خیبر پختونخوا تیمورسلیم جھگڑا کاکہنا ہےکہ ویکسین نہ لگوانے والوں پرسفری پابندیاں عائد کریںگے موبائل سم بھی بلاک ہوسکتی ہے۔ ویکیسن نہ لگوانے پرسرکاری ملازمین کی تنخواہیں روکنےپر بھی غورکیا جارہاہے۔

پریس کانفرنس کرتےہوئے وزیرِ صحت خیبر پختونخوا تیمور سلیم جھگڑا نےکہا کہ کورونا وائرس کی چوتھی لہرمیں شدت پرمزید سختیاں کرنی پڑیں تو کریںگےجعلی ویکسینیشن سرٹیفکیٹ بنوانے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

انہوں نےکہا ہے کہ خیبر پختونخوا کی 30 فیصد آبادی مکمل ویکسی نٹیڈہے ۔ گزشتہ روزکے ڈیٹا کے مطابق اب تک 7.3 ملین سے زائد ویکسین لگائی۔ 15لاکھ لوگوں کودوسری ڈوزز دی جاچکی ہے۔ روزانہ 2 لاکھ افراد کو ویکیسن لگانےکاٹارگٹ ہے۔

انہوں نےبتایاکی اہم ہسپتالوں میں کورونا مریضوں میں صرف 2 فیصد ایسے ہیں جو ویکیسن لگوا چکےہیں اور اسی لیے خطرے سے باہر ہیں۔ صوبے بھر میں 750 سے زیادہ ویکسینیشن سینٹر بنائے گئے ہیں،

آدھی آبادی کوویکسین لگ گئی تو وائرس کا اثر کم ہوجائےگا۔

انکاکہنا ہےکہ فرسٹ ڈوزکےحساب سےچترال کی 65 فیصدآبادی ویکسینیٹڈ ہوچکی ہے،چترال کی 40 فیصد آبادی کو دوسری ڈوزبھی لگائی جاچکی ہے۔ کرم میں 15 فیصد آبادی ویکسین کی دونوں خوراکیں لگواچکی ہے۔

انہوں نےمزید بتایاکہ صوبے میں کورونا کی موجودہ شرح 5.2فیصد ہے ہسپتالوں میں مریض پچھلی لہر سے صرف 20 فیصد کم ہیں ۔