hareem fatima case

حریم فاطمہ قتل کیس: ملزمہ کے والد نے نیا پنڈورا باکس کھول دیا

ویب ڈیسک(کوہاٹ ) کوہاٹ خٹک کالونی کی تین سالہ حریم فاطمہ زیادتی و قتل کیس میں گرفتار ملزمہ رابعہ کے والد محمد شاہ نے نیا پنڈورا باکس کھول دیا ہے ۔

خٹک کالونی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئےگرفتار ملزمہ کے والد نے بتایا کہ حریم فاطمہ کے دادا اور دیگر گھروالےاپنی بیٹی کی شادی زبردستی ان کے اکلوتےبیٹےنوید احمد سےکراناچاہتے تھے کیونکہ ان کی نظریں میری جائداد پر ہیں اور اس مقصد کے حصول کےلئے پہلےمیری ذہنی معذوربیٹی کو جنسی ہراسانی کا نشانہ بنا کربلیک میل کرتےرہے اور میری بیٹی کو اپنی پوتی کے قتل کے الزام میں گرفتارکروایا اوراب میرے اکلوتے بیٹےسے زبردستی اپنی بیٹی کی شادی کروانا چاہتے ہیں مقصد میری میری جائداد ہتھیانا ہے۔

انہوں نےکہاکہ قتل کیس میں ملوث افراد اورکیس کےحوالےسےاہم حقائق اور ثبوت سامنےلانےکےلیے پریس کانفرنس کرنا چاہی جسکا کا اظہار اس نے فیس بک پر اپنی آئی ڈی سے ایک پوسٹ کےذریعے کیا جس کے بعد حریم فاطمہ کے دادا نےمیرے بیٹےپرسائبر کرائم کا بنیادالزام لگا کر ایف آئی اے سے گرفتار کروایا جہاں میرے بیٹے کے موجود ثبوت اور شواہد ضائع کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

ملزمہ کے والدنےالزام عائد کیاحریم فاطمہ کےدادا مختلف اوقات میں ان کی گرفتار ذہنی معذوربیٹی کوجیل آزاد کرانےاورسارا معاملہ رفع دفع کرنےکےلئےان سےمختلف اوقات میں بھاری رقم کا مطالبہ بھی کر چکے ہیں اوران کےبیٹyنوید کے پاس حریم فاطمہ زیادتی و قتل کیس کے ثبوت اور شواہد ضائع کرواناچاہتےہیں۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ گزشتہ ہفتے حریم فاطمہ زیادتی و قتل کیس میں گرفتار ملزمہ کی درخواست ضمانت پشاور ہائیکورٹ نے رد کر دی تھی جس کے بعد ملزمہ کی جانب سے پہلی مرتبہ اس کے والد کی جانب سے تفصیلی موقف میڈیا کے سامنے پیش کیا گیا