اسلامک یونیورسٹی

اسلامک یونیورسٹی زیادتی کیس میں مرکزی ملزم کی ضمانت منظور

ویب ڈیسک :اسلامی یونیورسٹی زیادتی کیس میں مرکزی ملزم ابراہیم خان کی ضمانت بعد از گرفتاری منظور کرلی گئی۔اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے چار صفحات کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا۔

یہ بھی پڑھیں:ملک بھر میں کورونا وبا سے مزید 54 افراد انتقال کرگئے

عدالت نے ملزم ابراہیم خان کی ایک لاکھ روپے کے مچلکوں کے عوض ضمانت منظور کی ۔ عدالت نے کہاکہ پہلے تو کیس میں ایف آئی آر متاثرہ لڑکے نے نہیں کرائی دوسرا چھ دن بعد ایف آئی آر ہوئی، نہ متاثرہ لڑکے کا فوری میڈیکل ہوا نہ 161 کو فوری طور پر بیان کیا گیا۔

فیصلے میں کہاگیاکہ تفتیشی افسر عدالت کو مطمئن نہیں کر سکا جس کی بنیاد پر ملزم کو مزید قید میں رکھا جائے ،وکیل شیر افضل مروت اور وکیل اسامہ طارق نے ملزم کی جانب سے کیس کی پیروی کی۔

عدالت نے کہاکہ ملزم کے وکیل کے متاثرہ لڑکے تین اسپلیمنٹری بیانات ریکارڈ کرائے تینوں میں تضاد ہے، ملزم کے وکیل نے کہا شکایت کنندہ وقوعہ کا عینی شاہد نہیں ایف آئی آر بھی فیک ہے،اسلامی یونیورسٹی میں اٹھارہ جون کو واقعہ ہوا تھا 24 جون کو تھانہ سبزی منڈی میں ایف آئی آر درج ہوئی۔