مشرقیات

مصیبت اکیلی نہیں آتی ساتھ میں اس کی سہیلیاں بھی بن بلائے چلی آتی ہیں ہر سیانے بندے کو یہ بات معلوم ہو تی ہے سوائے سرکاری سیانوں کو اس لئے سرکار ی دسترخوان پرمفت کی توڑنے والوں کو کبھی سمجھ نہیں آئی کہ مہنگائی کا نہ تھمنے والا ریلا ان کے سیاسی مخالفوں کے پلڑے میں وہ عوامی وزن بھی شامل کرتا جا رہا ہے جس سے وہ گزشتہ تین سال کے دوران وہ محروم تھے۔بارہا ان سطور میں عرض جناب کیا تھا کہ مہنگائی کے جن کو قابو کرنے کی سوچیں ،پانچ سال پورے کرنے ہیں تو،تاہم سرکار کے پاس موجود جناتی کابینہ میں کوئی ایک بھی دھانسو قسم کا جن سامنے نہیں آیا جو اپنی عقل ودانش یا قوت بازو سے مہنگائی کی چکی میں پستے لوگوں کی جان بچانے کو آتا،اب حال یہ ہے کہ سیاسی مخالف کچھ بھی نہ کریں تو عوام ازخود نوٹس لینے کو تیار ہیں ،اسی بات کا ادراک کرتے ہوئے سیاسی مخالفوں کو تو چھوڑیں گزشتہ تین سال سے سرکار کے دسترخوان پر بیٹھے اتحادی بھی راہ فرارڈھونڈ رہے ہیں۔کراچی کے بھائی لوگوں نے سرکار کی کارکردگی سے خود کو بری الذمہ قرار دینے کے لئے پتلی گلی کی تلاش شروع کر دی ہے جبکہ بلوچستا ن کے محاذ پر سرکار کو ہزیمت سے دوچار کرنے کا تمام تر سامان کر لیا گیاہے۔
جام کمال کو بچانے کے لئے ہونے والی دوڑ دھوپ کی آخری کوششیں بھی ناکام ہوگئیں تویہ تحریک اپنا اگلا پڑائو پنجاب کو قرار دے رہی ہے۔وسیم اکرم پلس کو تخت سے اتار نے میں اپوزیشن جماعتیں کامیاب ہوگئیں تو مرکز میں حکمرانی سے دل اچاٹ ہو جانا ہے سرکار کا۔۔پس ثابت ہوا کہ سوکاموں کا ایک کام کرنا تھا سرکار نے کہ کسی نہ کسی طرح مہنگائی کے جن کو بوتل میں بند کر دیاجاتا تاہم ایسا نہیں کیا جا سکا اب مہنگائی کے چرچے ہیں اور حکومت کو جن سو مصائب کا سامنا ہے ان کا مقابلہ کرنے کے لئے عوامی محاذ پر اس کی پوزیشن کمزور سے کمزور ہوتی جا رہی ہے۔اوپر سے ایک ہی صفحے کی تکرار بھی اب سننے کو نہیں مل رہی۔کہنے والوں کے بقول سرکار نے اپوزیشن ہی نہیں تمام طبقات سے اپنے تعلقات خراب کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی ہے اور اس کی بڑی وجہ مہنگائی ہے۔حکومت صرف اس محاذ پر کامیابی حاصل کرکے تمام مخالفوں کے عزائم خاک میں ملا سکتی تھی تاہم یہ محاذ اس سے فتح اس لئے نہیں ہورہاکہ مبینہ طور پر آئی ایم ایف کی پروگرام نے اس کے ہاتھ ہی نہیں پائوں بھی باندھ دئیے ہیںاس کا مطلب یہ ہوا کہ مہنگائی عنقریب بھی کم نہیں ہوگی اور سرکا ر کے لئے یہ مصیبت اپنی سہیلیوں سمیت ام المصائب بنتی رہے گی۔