دس دسمبر یوم مذمت

علما کی جانب سے دس دسمبر کو یوم مذمت منانے کا اعلان

ویب ڈیسک: ملک کے تمام مکاتب فکر کے علما نے 10 دسمبر کو سیالکوٹ میں سری لنکن شہری پریا نتھا دیاودھنہ کے پرتشدد ہجوم کے ہاتھوں قتل کے خلاف یوم مذمت کے طور پر منانے کا اعلان کیا ہے۔

یہ اعلان منگل کو اسلام آباد میں سری لنکا کے ہائی کمیشن کے دورہ کے موقع پر علما نے کیا اس موقع پر علما کرام نے سری لنکا کؤکے ہائی کمشنر وائس ایڈمرل (ریٹائرڈ)موہن وجے وکرما سے اس سانحے پر اظہار تعزیت بھی کیا۔ سری لنکا کے ہائی کمشنر نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے ضرورت کے وقت ہر بار ان کے ملک کی مدد کی ہے اور جواب میں سری لنکا نے بھی ایسا ہی کیا ہے۔ انھوں نے واضح کیا کہ اس اندوہناک واقعے سے دونوں ممالک کے تعلقات پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔

علما کی جانب سے جاری ہونے والے مشترکہ اعلامیے کے مطابق یہ پوری صورت حال قرآن و سنت، آئین اسلامی جمہوریہ پاکستان اور ملک میں رائج جرم و سزا کے قوانین کے سراسر خلاف ہے۔ علما کے وفد میں شامل مفتی تقی عثمانی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سیالکوٹ میں جس طرح جنون کا مظاہرہ کیا گیا ہے، پاکستان میں کوئی ایسا طبقہ نہیں جو اس قتل کی مذمت نہ کرتا ہو۔ انھوں نے کہا اس واقعے نے پورے پاکستان کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ سری لنکا برادر ملک ہے جس کے ساتھ پاکستان کے برادرانہ تعلقات ہیں۔ انھوں نے کہا ہم اس واقعے پر اپنے گہرے افسوس کا اظہار کرتے ہیں اور اس واقعے میں ملوث مجرموں کو سخت سزا دی جائے گی۔ ان کے مطابق جو لوگ اس واقعے میں ملوث ہوئے اور جنھوں نے بغیر کسی وجہ کے ہمارے اس سری لنکن بھائی کو قتل کیا ہے، وہ بد ترین سزا کے مستحق ہیں۔