پیٹرولیم مصنوعات

عوام پر ایک بار پھر پیٹرول بم گرادیا گیا

حکومت نے ایک بار پھر عوام پر پیٹرول بم گرادیا، پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کردیا۔

وزارت خزانہ کی جانب سے جاری کردہ نوٹی فکیشن کے مطابق پیٹرول کی قیمت میں 3 روپے اور 1 پیسے اضافہ کیا گیا ہے جس کے بعد نئی قیمت 147 روپے اور83 پیسے فی لیٹر ہوگئی۔ ہائی اسپیڈ ڈیزل کی فی لیٹر قیمت میں 3 روپے اضافہ کیا گیا ہے، نئی قیمت 114 روپے 62 پیسے فی لیٹر ہوگئی ہے۔مٹی کا تیل 3 روپے مہنگا کردیا گیا ہے اور اس کی نئی قیمت 116 روپے اور48 پیسے فی لیٹر ہوگئی ہے۔ لائٹ ڈیزل کی فی لیٹر قیمت میں 3 روپے 33 پیسے اضافہ کیا گیا ہے، نئی قیمت 114 روپے 54 پیسے فی لیٹر ہوگئی ہے۔

وزارت خزانہ کے مطابق قیتموں کا اطلاق آج رات 12 بجے سے ہوگیا۔

یہ بھی پڑھیں:پاکستان کو 15.8 ارب ڈالر کی ریکارڈ ترسیلات موصول: فواد چوہدری

وزارت خزانہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ اوگرا نے پیٹرول کی فی لیٹر قیمت میں 5 روپے 52 پیسے اضافہ کی سفارش کی تھی جب کہ ہائی اسپیڈ ڈیزل کی فی لیٹر کی قیمت 6 روپے 19 پیسے اضافہ کی سفارش کی تھی۔ وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نے عالمی مارکیٹ میں اضافہ کا بوجھ عوام پر نہیں ڈالا، سیلز ٹیکس کی کمی کرکے عوام کو ریلیف دیا گیا۔ سیلز ٹیکس کی کمی کی وجہ سے 2.6 ارب روپے کے ریونیو کا نقصان ہوگا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل حکومت نے 15 دسمبر کو پیٹرول اور ڈیزل کی قیمت میں 5 روپے فی لیٹر کمی کا اعلان کیا تھا جو یکم ستمبر کے بعد حکومت کی جانب سے پہلی مرتبہ قیمتوں میں کمی کا اعلان تھا۔

مزید دیکھیں :   شیریں مزاری کو عدالت کے دائرہ اختیار سے غیر قانونی طور پر اٹھایا گیا