سپریم کورٹ نے حکومت کو ڈاکٹر ظفر مرزا کو ہٹانے کا کہہ دیا

سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں پانچ رکنی بینچ نے کورونا سے متعلق حکومتی اقدامات پر از خود نوٹس کی سماعت،

اٹارنی جنرل عدالت میں پیش ہوئے، سماعت کے دوران چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ظفر مرزا کی کارکردگی سے متعین نہیں ہیں اور آج ظفر مرزا کو ہٹانے کا حکم دیں گے.

اٹارنی جنرل نے سماعت کے دوران کہا کہ اس موقع پر ظفر مرزا کو ہٹانا بڑا تباہ کن ہوگا، آدھی فلائٹ میں ظفر مرزا کو نہ ہٹائیں،عدالت ظفر مرزا کا معاملہ حکومت پر چھوڑ دے.

کابینہ میں حالیہ ردوبدل پر چیف جسٹس کا نام لیے بغیر تبصرہ، وزیر اعظم کابینہ میں مہرے بدل رہے ہیں, ایک مہرہ اٹھا کر دوسرے مہرے میں رکھ دیا جاتا ہے،اتنی بڑی کابینہ کی ضرورت نہیں دس افراد کافی ہیں چیف جسٹس کا دوران سماعت ریمارکس.