ماہرہ خان اور فہد مصطفیٰ کو کیسے کیسے ٹرول کیا گیا، ان کا کیا جواب تھا

ماہرہ خان اور فہد مصطفیٰ دو شاندار فلمی ستارے ہیں جو جلد ہی پہلی بار اپنی آنے والی فلم ’’قائد اعظم زندہ باد‘‘ میں ایک ساتھ نظر آنے والے ہیں۔ دونوں اپنی آنے والی فلم کی تشہیر کے لیے مختلف شوز میں نظر آ رہے ہیں۔ جنید اکرم کے ساتھ اپنے تازہ ترین پوڈ کاسٹ میں، انہوں نے ٹرول کیے جانے اور سوشل میڈیا کے ٹرولز سے نمٹنے کے بارے میں تفصیل سے بات کی۔

ٹرولنگ یا سوشل میڈیا ٹرول سے نمٹنے کے حوالے سے ماہرہ خان اور فہد مصطفیٰ نے تفصیل سے جواب دیا۔ فہد مصطفی نے اس ٹرولنگ کے بارے میں بات کی جب وہ شارٹس پہنتے تھے اور پتلی ٹانگوں کی وجہ سے انہیں ٹرول کیا جاتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ میں نے دو باتیں سنی ہیں، ایک بار میں نے شارٹس پہنی تو تمام پاکستانیوں نے میری ٹانگوں پر مجھے ڈانٹنا شروع کر دیا، کہنے لگے یہ کیسی ٹانگیں ہیں، اور میں نے دیکھا ہے، ہم پاکستانیوں کی ٹانگیں ایک جیسی ہیں۔

اس بارے میں بات کرتے ہوئے کہ وہ کس طرح ٹرولز کو ہینڈل کرتے ہیں، فہد نے کہا، “میں اپنے ٹویٹر اور انسٹا فالورز کو اپنی فیملی نہیں کہتا، یہ وہ لوگ ہیں جو صرف آپ کے کام میں دلچسپی رکھتے ہیں، انہیں سنجیدگی سے نہ لیں،  پرانے اداکاروں کا کیریئر طویل تھا کیونکہ ان کی ذاتی زندگی برقرار اور نجی تھی، میں اپنی نجی زندگی کو نجی طور پر چاہتا ہوں، جب میں عوام میں بہت زیادہ بات چیت کرتا ہوں تو میں بے چین ہوجاتا ہوں۔

مزید دیکھیں :   اسمارٹ فون جوا بھی ہے اور نشہ بھی

سوشل میڈیا ٹرولز سے نمٹنے کے حوالے سے ماہرہ خان کا کہنا تھا کہ ’میری نجی زندگی انتہائی نجی ہے، جب میں چھٹیوں پر جاتی ہوں تو تصویر اپ لوڈ نہیں کرتی اور نہ ہی کوئی تصویر سامنے آتی ہے، ایسا صرف ایک بار ہوا جب مجھے سوشل میڈیا پر غصے کا سامنا کرنا پڑا، اور اس وقت کسی نے سوچا کہ میری زندگی کو کس قدر دھچکا لگا، میں کیسے سنبھلی اور کیسے زندگی میں واپس آئی۔ ان کا کہنا تھا کہ اب مجھے سمجھ آچکی ہے کہ سوشل میڈیا پر مداحوں کیلئے کیا کچھ شیئر کیا جاسکتا ہے اور کیا نہیں شیئر کیا جاسکتا۔

یاد رہے کہ فہد مصطفیٰ کو شارٹس پہننے پر عوام نے ٹرول کیا تھا اور ماہرہ خان کی نیویارک سے رنبیر کپور کے ساتھ تصاویر وائرل ہونے پر سوشل میڈیا پر مداحوں نے سخت غصے کا اظہار کیا تھا۔