عمران خان نےخاتون جج دھمکی کیس میں معافی مانگ لی

ویب ڈیسک:خاتون جج کو دھمکی دینے سے متعلق توہین عدالت کیس میں چیئرمین تحریک انصاف )پی ٹی آئی( عمران خان نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں معافی مانگ لی۔
اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بنچ نے خاتون جج کو دھمکی دینے سے متعلق توہین عدالت کیس کی سماعت کی ، دوران سماعت چیئرمین تحریک انصاف عمران خان خاتون جج سے معافی مانگنے کیلئے رضا مند ہوگئے۔
عمران خان نے عدالت میں مؤقف اختیار کیا کہ اگر کوئی ریڈ لائن کراس کی ہے تو اس پر معافی مانگتا ہوں، یقین دلاتاہوں آئندہ ایسا کوئی عمل نہِں ہوگا، خاتون جج کو دھمکانے کا کوئی ارادہ نہیں تھا میں نے خاتون جج کیخلاف لیگل ایکشن کی بات کی تھی، اگر عدالت کے تو خانون جج کے سامنے جاکر معافی مانگنے کو تایر ہوں۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ آپ کا بیان ریکارڈ کرتے ہیں فرد کی کارروائی روک رہے ہیں ، آپ نے اپنے بیان کی سنگینی کو سمجھا، ہم اس کو سراہتے ہیں، آپ تحریری حلف نامہ جمع کرائیں، بیان حلفی داخل کریں پھر عدالت جائزہ لے گی۔اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمران خان کو حلف نامہ جمع کرانے کے لیے 29 ستمبر تک کی مہلت دی اور کیس کی سماعت 3 اکتوبر تک ملتوی کر دی۔ یاد رہے کہ خاتون جج کو دھکیوں سے متعلق توہین عدالت کیس میں اسلام آباد ہائیکورٹ نے عمران خان کو غیر مشروط معافی مانگنے کے لیے دو مواقع فراہم کیے تھے تاہم عمران خان نے غیر مشروط معافی مانگنے کے بجائے اپنے الفاظ واپس لینے اور آئندہ محتاط رویہ اختیار کرنے کا جواب عدالت میں جمع کرایا۔ جسے عدالت نے غیر تسلی بخش قرار دیا۔

مزید دیکھیں :   بہوسارا انعام قتل کیس میں سینئرصحافی ایاز میر گرفتار