وزیراعظم ہاؤس سے آڈیو لیک

وزیراعظم ہاؤس سے آڈیو لیک ہونا انتہائی تشویشناک معاملہ ہے، مولانا فضل الرحمٰن

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) اور جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کا کہنا ہے کہ وزیراعظم ہاؤس سے آڈیو لیک ہونا تشویشناک معاملہ ہے، حکومت کو فوری ایکشن لیتے ہوئے اس سے سختی سے نمٹنا ہوگا۔
ویب ڈیسک: ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم ہاؤس سے آڈیو لیک ہونا انتہائی تشویشناک ہے، وزیر اعظم سے کہوں گا سخت ہاتھ ڈالیں، اسحاق ڈار کے آنے کے حوالے سے میرے ساتھ کوئی رابطہ نہیں ہوا، ان کے تجربے سے فائدہ اٹھانا چاہیے، دفاعی قوت دوسرے درجے کی چیز ہے، چائنا ہم سے ناراض ہوگیا ہے، سی پیک چائنا کی بہت بڑی انویسٹمنٹ تھی۔
انہوں نے مزید کہا کہ بھارت اسرائیل سے آئی فنڈنگ ثابت ہوچکی ہے، عمران خان ناا ہل ثابت ہوئے، یہ ہر بات میں جھوٹے ثابت ہوئے، کاغذ لہرا کر عمران خان نے کہا میرے خلاف سازش ہوئی، پی ٹی آئی چیئرمین بتائے وہ ایکس وائی زیڈ کون ہے، ہم نے ان کی حکومت گرا دی تو ان کا ایجنڈا مکمل نہ ہوا، عمران خان پاگلوں کی طرح گلی گلی گھومتے ہیں۔
پی ڈی ایم کے سربراہ کا کہنا تھا کہ عمران حکومت نے سی پیک منصوبے کو رول بیک کیا، انہوں نے ہمارے ملک کے اسٹیٹ بینک کو آئی ایم ایف کو دے دیا، انہوں نے ساری سیاست کرپشن پر کی، ان کی حکومت نے سی پیک کی خفیہ معلومات امریکا کو فراہم کیں، پچھلی حکومت نے سی پیک پر کام روکا جس پر چین ناراض ہوا، سابق وزیر خزانہ شوکت ترین کی آڈیو وائرل ہوئی، شوکت ترین چاہتا ہے پاکستان ڈیفالٹ ہوجائے۔

مزید دیکھیں :   خریداری سکینڈل،محکمہ صحت کے10 افسروں کیخلاف کارروائی