شہباز شریف

گیس درآمد کی کوشش کی لیکن تاحال انتظام نہیں ہوسکا، شہباز شریف

وزیراعظم شہباز شریف نے تھر کول مائنز فیز ٹو کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ یہ خوشحالی اور ترقی کا منصوبہ ہے، تھر کے کوئلے سے دس روپے فی یونٹ بجلی پیدا ہوگی۔
ویب ڈیسک: تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم شہباز شریف نے تھر کول بلاک ٹو سندھ اینگرو کول مائن کمپنی کے توسیع منصوبے کا افتتاح کر دیا، اس موقع پر وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری، وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ، چینی سفیر اور دیگر حکام کی موجودگی میں وزیراعظم کو تھر کول پراجیکٹ پر بریفنگ دی گئی، انہوں ںے کوئلہ کی ترسیل پر مامور خواتین ٹرک ڈرائیورز سے بھی ملاقات کی۔
اس موقع پر وزیر اعظم نے کہا کہ تھر میں 175 ملین ٹن کوئلے کے ذخائر موجود ہیں جس سے گیس بنا سکتے ہیں، آئندہ سال تک تھر کے کوئلے سے ملکی معیشت میں غیر معمولی اضافہ ہوگا، پاور پراجیکٹ میں بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت بڑھ کر 2640 میگا واٹ ہوجائے گی، تھر کے کوئلے سے سستی بجلی پیدا ہوگی، یہ خوشحالی اور ترقی کا منصوبہ ہے۔
وزیر اعظم نے کہا کہ یہ جدید ٹیکنالوجی سے مکمل ہونے والا منصوبہ ہے جس سے ماحولیاتی آلودگی پیدا نہیں ہوگی، ایک وقت تھا جب تھر میں زندگی گزارنے کے آثار نہیں تھے اور اب یہاں سے بجلی کی پیداوار ہوتی ہے، تھر میں بہترین معیار کے پلانٹ اور بوائلر ہیں، یہاں آلودگی نہیں ہے، منصوبے سے پاکستان کی معیشت کو فائدہ پہنچے گا۔
ان کا کہنا تھا کہ منصوبے سے ہمارے زرمبادلہ کی خطیر رقم بچ جائے گی، اگر 100 فیصد تھرکول سپلائی کیا جائے تو اربوں ڈالرز بچت ہوگی، تیل کی قیمتیں اوپر نیچے ہوتی ہیں، تھر میں کوئلے کا بڑا ذخیرہ ہے جس کو تیل اور ڈیزل میں کنورٹ کرنے کے حوالے سے آئندہ ہفتے اسلام آباد میں اجلاس طلب کرونگا۔

مزید دیکھیں :   آٹے کیلئے خواتین خوار،دھکے ،لاٹھی چارج