دہلی کی جامع مسجد

دہلی کی جامع مسجدمیں لڑکیوں کے داخلے پرعائدپابندی ختم

ویب ڈیسک :بھارتی دارالحکومت دہلی میں واقع جامع مسجد میں لڑکیوں کے داخلے پر لگائی گئی پابندی کا فیصلہ واپس لے لیا گیا ہے ۔ جامع مسجد کے امام احمد بخاری نے یہ فیصلہ دلی کے لیفٹیننٹ گورنر وی کے سکسینہ کی مداخلت کے بعد واپس لیا ہے۔ جامع مسجد کے تینو ں دروازوں پر ایک بورڈ لگایا گیا تھا جس میں لکھا ہوا تھاجامع مسجد میں لڑکی اور لڑکیوں کا اکیلے داخلہ منع ہے اس بورڈ کے لگتے ہی کئی حلقوں کی جانب سے اس پر شدید نکتہ چینی کی گئی تھی ۔ میڈیا میں حکام کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ امام بخاری نے پابندی کو واپس لینے کا فیصلہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مسجد میں آنے والے مرد اور خواتین عبادت گاہ کے تقدس کا خیال رکھیں گے۔
انہوں نے کہا کہ مسجد ایک عبادت کی جگہ ہے، لوگ یہاں عبادت کے لیے آتے ہیں ۔ لیکن لڑکیاں یہاں اکیلی آتی ہیں اپنے دوست لڑکوں کا انتظار کرتی ہیں ۔یہ عبادت گاہ اس مقصد کے لیے نہیں ہے۔
مسجد کی انتظامیہ نے مسجد کے احاطے میں موسیقی کے ساتھ ویڈیو کی شوٹنگ پر بھی پابندی عائد کر دی ہے۔ ہر روز ہزاروں سیاح پرانی دلی میں واقع جامع مسجد دیکھنے کے لیے آتے ہیں ۔ ان سیاحوں میں ایک بڑی تعداد خواتین اور لڑکیوں کی ہوتی ہے۔ تاریخی عمارتیں ، مقبرے اور قلعے نوعمر لڑکوں اور لڑکیوں میں بہت مقبول ہیں ۔ وہ ان مقامات کو اکثر گھومنے پھرنے اور ملنے جلنے کے لیے استعمال کرتے ہیں ۔

مزید دیکھیں :   بی آر ٹی بس سٹاپس کی معلومات گوگل میپ پر دستیاب