بنوں کے 3تاجر اغوا

شمالی وزیرستان میں بنوں کے 3تاجر اغوا کے بعد قتل کردیئے گئے

ویب ڈیسک :شمالی وزیرستان میں بنوں کے تین تاجروں کو اغوا کے بعد قتل کردیا گیا۔مقتولین جیولری کی دکانیں چلاتے تھے۔ مقامی سرکاری ذرائع کے مطابق میرعلی بازار کے عین وسط میں بنوں سے تعلق رکھنے والے تین تاجر اپنی جیولری کی دْکا ن ”رحمت جیولرز ”میں سو رہے تھے کہ رات کو نامعلوم مسلح افراد نے انہیں بندوق کی نوک پر بازار سے متصل کھیتوں میں لے گئے اور تینوں کو فائرنگ کرکے قتل کر ڈالا۔ تینوں مقتولین کی لاشیں کھیتوں میں پڑی رہیں۔
قاتلوں نے ہر ایک نعش کے ساتھ اس کے نام اور سکونت کا رقعہ بھی لکھا چھوڑا ہے ۔ مقتولین کی شناخت رحمت اللہ ولد امیر ممتاز ساکن غوریوالہ، ہارون ولد دل نواز ساکن شیخان اور دلدار شاہ ولد رُخسار ٹوری کلہ لوڑا پل بنوں کے نام سے ہو ئی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ تینوں الگ الگ جیولری کی دکان چلاتے تھے۔ رحمت اللہ اور ہارون میر علی میں مستقل دکان چلاتے جبکہ دلدار شا ہ کی چار ماہ سے عارضی دُکان تھی۔ گزشتہ شب تینوں دوست رحمت کی دُکان میں اکٹھے موجود تھے ۔
دریں اثناء تینوں کی لاشیں بنوں میں اُن کے آبائی گاؤں پہنچا دی گئی ہیں۔چیمبر آف کامرس کے ضلعی صدر شاہ وزیر نے کہا کہ یہ دہشت گردی کا افسوسناک واقعہ ہے ۔بنوں کے تاجروں نے آج احتجاج کی کال دی ہے۔ دوسری جانب بعض ذرائع نے بتایا ہے کہ واقعہ بھتہ نہ دینے پر رونما ہوا ہے جو دہشتگردی کا واقعہ ہے ، تاہم آ خری اطلاعات تک واقعہ کی رپورٹ درج نہیں کرائی گئی۔ واقعہ سے متعلق ابھی تک کسی تنظیم یا گروپ نے ذمہ داری قبول نہیں کی ہے ۔

مزید دیکھیں :   مریم نواز لندن سے دبئی پہنچ گئیں، آج لاہور آئیںگی