پاکستان بمقابلہ انگلینڈ

پاکستان بمقابلہ انگلینڈ، ٹیسٹ میچوں میں کس کا پلڑا بھاری؟

1954میں پہلی مرتبہ پاکستان کی ٹیم نے انگلینڈ کا دورہ کیا تھا اور چار ٹیسٹ میچوں پر مشتمل سیریز کھیلی تھی ، اوول کے میدان میں پاکستان کی ٹیم نے اپنے کئی زیادہ مضبوط ٹیم کو شکست دیکر دنیائے کرکٹ میں اپنی آمد کا شاندار اعلان کیا تھا تھا ، تب سے اب تک پاکستان اور انگلینڈ کو ایک دوسرے کے خلاف ٹیسٹ کرکٹ کھیلتے ہوئے 68 سال سے زائد کا عرصہ گزر چکا ہے۔ اس دوران دونوں کے درمیان 26 ٹیسٹ سیریز کھیلی جاچکی ہیں جن میں سے 8 سیریز پاکستان میں اور 16 انگلینڈ میں کھیلی گئیں جبکہ پاکستان کی 2 ہوم سیریز سیکیورٹی مسائل کے باعث متحدہ عرب امارات میں منعقد ہوئیں۔مجموعی طور پر ان 26 سیریز میں پاکستان کو 8 میں کامیابی ملی جبکہ 10 میں ناکام کا منہ دیکھنا پڑا اور 8 سیریز برابری پر منتج ہوئیں۔اب تک پاکستان انگلینڈ کے خلاف کل 86 ٹیسٹ کھیل چکا ہے اور یہ بھی اس کا ریکارڈ ہے کہ اس نے سب سے زیادہ ٹیسٹ میچ اسی ملک کے خلاف کھیلے ہیں۔ ان 86 ٹیسٹ میچوں میں پاکستان کو 21 میں فتح ملی اور 26 میں شکست ہوئی، جبکہ بقیہ 39 ٹیسٹ ہار جیت کے فیصلے کے بغیر ختم ہوئے۔انگلینڈ میں پاکستان نے کل 56 ٹیسٹ کھیلے جن میں سے پاکستان نے 12 اور انگلینڈ نے اس سے دگنے یعنی 24 ٹیسٹ جیتے جبکہ 20 ٹیسٹ ڈرا ہوئے۔ دوسری جانب پاکستان کی سرزمین پر 24 ٹیسٹ کھیلے گئے جن میں بہت کم میچ فیصلہ کن رہے۔ پاکستان کو 4 میں اور انگلینڈ کو 2 میں فتح حاصل ہوئی جبکہ 18 ٹیسٹ ہار جیت کے فیصلے کے بغیر ختم ہوئے۔ متحدہ عرب امارات میں 6 ٹیسٹ کھیلے گئے جن میں انگلینڈ کوئی بھی میچ نہیں جیت سکا جبکہ پاکستان نے 5 ٹیسٹ جیتے اور ایک ٹیسٹ ڈرا ہوا۔ان تمام ٹیسٹ سیریز اور میچوں کے نتائج کا جائزہ لینے سے ظاہر ہوتا ہے کہ انگلینڈ کو 2 سیریز اور 5 میچوں کی معمولی برتری حاصل ہے۔ دیکھنا یہ ہے کہ کیا پاکستان موجودہ سیریز میں انگلینڈ کی اس برتری کو کم کرنے میں کامیاب ہوسکے گا یا پھر اس برتری میں مزید اضافہ ہوجائے گا۔