پاکستان میں دہشتگردی واقعات

‏آپریشن رجیم چینج کےبعد پاکستان میں دہشتگردی واقعات میں 52 فیصد اضافہ ہوا، فوادچودھری

ویب ڈیسک: پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور سابق وفاقی وزیر فوادچودھری نے کہا ہے کہ آپریشن رجیم چینج کےبعد پاکستان میں دہشت گردی کے واقعات میں 52 فیصد اضافہ ہو چکا ہے، ‏ افغان پالیسی تباہ حال ہے اور کاؤنٹر ٹیررازم پر کسی کی توجہ نہیں۔
سماجی رابطےکی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں فوادچودھری نے کہا ہے کہ کوئٹہ میں دہشت گردی کے واقعہ میں شہادتوں پر انتہائی افسوس ہوا، آپریشن رجیم چینج کے بعد سے اب تک پاکستان میں دہشت گردی کے واقعات میں 52 فیصد اضافہ ہو چکا ہے، انہوں نے کہا کہ270 شہری اور سیکیورٹی اہلکار ان واقعات میں شہید ہوئے ہیں جبکہ سینکڑوں زخمی ہو چکے ہیں۔
فوادچودھری نے مزید کہا کہ دہشت گردی کی بنیادی وجہ اسلام آباد میں سنجیدہ حکومت نہ ہونا ہے معیشت کی طرح گورننس تباہ ہو چکی ہے، افغان پالیسی تباہ حال ہے اور کاؤنٹر ٹیررازم پر کسی کی توجہ نہیں، ڈر ہے کہ ہمیں 2018 کے بعدجو کامیابیاں حاصل ہوئیں کہیں انہیں کھو نہ دیں۔

مزید دیکھیں :   آئی ایم ایف شرائط مزید سخت،درآمدات پرپابندیاں ختم،ترقیاتی اخراجات کم کریں