بریک ڈائون پر میمز

”گھبرانا نہیں ہے پاکستان ری اسٹارٹ ہو رہا ہے” بریک ڈائون پر میمز کا طوفان

ویب ڈیسک:اس وقت پاکستان کے بیشتر علاقوں کو بجلی کی بندش نے اپنی لپیٹ میں لیا ہوا ہے جب کہ بریک ڈائون سے قبل جن خوش قسمت لوگوں کے موبائل فون اور ڈیوائسز چارج تھیں انہوں نے سوشل میڈیا پر بجلی کے تعطل پر مزاحیہ تبصرے کیے اور میمز شیئر کیں۔وزارت توانائی کی جانب سے ٹوئٹ میں کہا گیا کہ ابتدائی اطلاعات کے مطابق آج صبح7بج کر34 منٹ پر نیشنل گرڈ کی سسٹم فریکوئنسی کم ہوئی جس سے بجلی کے نظام میں بڑا بریک ڈان ہوا، سسٹم کی بحالی پر کام تیزی سے جاری ہے’۔
وزارت توانائی کی جانب سے جاری ہونے والے اس بیان کو ٹوئٹر صارفین سنجیدہ لینے کو تیار نہیں تھے اور انہوں نے اپنے مزاحیہ ٹوئٹس کے ذریعے اپنی مایوسی کا اظہار کیا۔ایک صارف نے بجلی بریک ڈائون پر بلاول بھٹو کا ایک پرانا بیان شیئر کیا جس میں کہا گیا تھا کہ’پرانے پاکستان میں خوش آمدید!۔کیا ہم نے کبھی پرانے پاکستان کو چھوڑا بھی تھا؟ایک صارف نے لکھا ”کسی آئی ٹی انجینئرنے مشورہ دیاہوگا ”ری سٹارٹ کرکے دیکھ لیں شائداس طرح ملک اچھاچل جائے ”ایک صارف نے ان لوگوں کی صورتحال پر جن کے موبائل فون چارج نہیں تھے، تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ’ہم آپ کے درد کو محسوس کر سکتے ہیں’۔معروف گلو کار علی ظفر نے ٹویٹ کی ”قسط ادا نہ کرنے پر آئی ایم ایف والے پاکستان کا بجلی کا میٹر اتار کر لے گئے ”ہفتے کے پہلے ہی روز بجلی بریک ڈائون پر ایک صارف نے کہا کہ’ہفتے کا کیا آغاز ہے’۔
الیکٹرونک ڈیوائسز کے ذریعے کام کرنے والے لوگوں کو درپیش مشکلات کا ذکر کرتے ہوئے ایک صارف نے کہا کہ سمجھ نہیں آرہا کہ لیپ ٹاپ استعمال کروں یا اس چارجنگ کو میٹنگ کے لیے بچا کر رکھوں۔ایک صارف نے اندھیرے کی میم شیئر کرتے ہوئے کہا کہ آج صبح کے مناظر۔ایک صارف نے دلچسپ صورتحال پر تبصرہ کیا جس میں ہر ایک دوسرے سے پوچھتا نظر آرہا ہے کہ کیا آپ کے گھر میں لائٹ ہے۔ایک شہری نے کہا کہ ایموشنل بریک ڈان، مینٹل بریک ڈان، فزیکل بریک ڈان کے بعد پیش خدمت ہے بجلی کا بریک ڈائون۔ایک صارف نے طنزیہ انداز میں لکھا کہ’انہوں نے اپنے گھر کے تمام گیس کے آلات بریک ڈائون کے لیے بروقت بجلی پر منتقل کردیے تھے۔اسی طرح سے انٹرنیٹ صارفین بجلی کی بندش کے دوران پیش آنے والی مشکلات کا مختلف طنزیہ انداز میں اظہار کر رہے ہیں۔
صحافی و تجزیہ کار سیرل المیڈا نے طنزاً لکھا کہ ‘بجلی فیول اور ڈالرز بچانے کا ایک طریقہ یہ بھی ہے کہ پورا ملک بند کردیا جائے۔’شہزور احمد نے ایک ٹویٹ میں لکھا’پورے ملک میں بجلی نہیں؟ کیا یہ میرا عزیز ہم وطنوں والا وقت ہے؟’وئٹر صارف نے لکھا کہ ‘مشن مجنوں والا سدھاتھ آیا تھا نیوکلیئر پلانٹ اڑانے، کسی لاہوری نے غلط راستہ بتا کر الیکٹرک پاور پر بھیج دیا۔ وہ پاور پلانٹ اُڑا کر چلا گیا۔

مزید دیکھیں :   دھماکہ کے وقت 300سے 400 تک افراد مسجدمیں تھے