پختونخوا کابینہ ارکان کیخلاف کرپشن الزامات

پختونخوا کابینہ کے سابق ارکان کیخلاف کرپشن الزامات میں تیزی

ویب ڈیسک : پاکستان تحریک انصاف کے دیرینہ کارکنوں نے سابق صوبائی کابینہ کے شرکاء کیخلاف نیب، اینٹی کرپشن اور دیگر تحقیقاتی اداروں سمیت پارٹی قیادت کو ثبوت فراہم کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ خیبر پختونخوا کابینہ کا حصہ رہنے والے پی ٹی آئی کے رہنمائوں کیخلاف پارٹی کی اپنی تنظیم نے لنگوٹ کس لئے ہیں۔ پارٹی تنظیم سمیت مختلف ونگز اور پارٹی کے دیرینہ کارکن بھی سابق وزراء اور کابینہ ارکان کیخلاف میدان میں آ گئے ہیں ایک جانب سوشل میڈیا پر سابق ارکان کیخلاف مہم چلائی جا رہی ہے
تو دوسری جانب ان کیخلاف ثبوت اکٹھے کرتے ہوئے اینٹی کرپشن اور نیب جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے سابق ارکان کے منتخب ہونے سے قبل کے اثاثے اور موجودہ اثاثوں کی بھی چھان بین اپنے طور پر کی گئی ہے من پسند افراد کی بھرتیوں، ترقیاتی فنڈز میں کمیشن کے حصول اور ٹھیکوں کی الاٹمنٹ کے سنگین الزامات لگائے گئے ہیں اس ضمن میں پہلے ہی پی ٹی آئی کی مختلف تنظیمیں اپنے منتخب ارکان پر الزامات لگا چکی ہیں جبکہ سابق وزیر کیخلاف وزیر اعلیٰ ہائوس کے باہر طلباء تنظیم نے احتجاجی مظاہرہ بھی کیا تھا
ذرائع کے مطابق سابق ارکان کیخلاف تحقیقاتی اداروں میں درخواست دینے سمیت پارٹی قیادت کو بھی ثبوت ارسال کئے جائیں گے اور اپنے سابق ارکان کا احتساب کیا جائیگا پارٹی تنظیم اس وقت آئندہ انتخابات کیلئے امیدواروں کے ناموں کو حتمی شکل دے رہی ہے جس میں سابق ارکان کو بھی زیر غور لایا جائیگا۔

مزید دیکھیں :   پی ڈی ایم کو ضمنی انتخابات میں حصہ نہیں لینا چاہیے، فضل الرحمان