سوات حوالات میں نوجوان جاں بحق

سوات،حوالات میں بند نوجوان گولی لگنے سے جاں بحق

ویب ڈیسک : سوات میں پولیس سٹیشن کے اندر زیر حراست نوجوان گولی لگنے سے جاں بحق ہو گیا ۔ متوفی کے لواحقین نے واقعہ کے خلاف شدید احتجاج کرتے ہوئے دھرنا دیا۔ پولیس حکام نے ایک اہلکار کو گرفتار کرکے تحقیقات شروع کردی ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ بنڑ پولیس نے پیر کے روز ایک جواں سال طالب علم عبید خان کو پولیس سے الجھنے پر حراست میں لیا اور حوالات میں بند کر دیا ۔
بعد میں نوجوان کی حوالات کے اندر ہی گولی لگنے سے موت واقع ہو گئی۔ پولیس کے مطابق نوجوان عبید مسلح تھا اور اس سے پستول لیتے ہوئے گولی فائر ہو گئی ۔ مقتول نوجوان کی نعش پوسٹ مارٹم کے لئے سیدو شریف ہسپتال منتقل کردی گئی ہے ۔ ڈی پی او سوات نے حوالات کے اندر نوجوان کو گولی لگنے اور اس کی موت واقع ہونے کی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے اور کہا ہے کہ ملوث اہلکاروں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی، ڈی پی او سوات کے مطابق ایک اہلکار کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔
ادھر نوجوان کی ہلاکت کے خلاف لواحقین اور اہلیان علاقہ نے شدید احتجاج کیا ہے اور ہسپتال میں مظاہرے کے بعد بنڑ تھانہ کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا۔ انہوں نے الزام لگایا کہ عبید کو پولیس اہلکاروں نے گولی مار کر قتل کیا ہے ۔

مزید دیکھیں :   سانحہ تاندہ ڈیم:انتظامیہ کے خلاف مقدمہ درج کرنے کیلئے درخواست دائر