جے آئی ٹی رپورٹ والیوم 10

الیکشن کمیشن انتخابات سے قبل تمام معاملات حل کرے، چیف جسٹس

ویب ڈیسک: چیف جسٹس آف پاکستان عمرعطا بندیال کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے الیکشن کمیشن کی سندھ میں صوبائی حلقہ بندیوں کے خلاف درخواستوں پر سماعت کی، اس دوران چیف جسٹس آف پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ حلقہ بندیاں عوامی مفاد کا معاملہ ہیں، سپریم کورٹ میں متعدد بار حلقہ بندیوں کا معاملہ آچکا ہے۔
چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ الیکشن کمیشن حلقہ بندیاں شفاف طریقہ کار کے تحت کرے، سندھ میں حلقہ بندیوں پر حساسیت زیادہ ہے، سندھ سے اکثر یہ گلہ کیا جاتا ہے کہ حلقہ بندیاں درست نہیں ہوئیں۔
دوران سماعت چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ الیکشن کمیشن عام انتخابات کب کرا رہا ہے؟ اس پر ڈی جی لاء الیکشن کمیشن نے کندھے اچکا دیئے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ یعنی ابھی تو انتخابات کی کوئی تاریخ ہی طے نہیں ہوئی، الیکشن کمیشن انتخابات سے قبل تمام معاملات حل کرے۔
بعد ازاں سپریم کورٹ نے حلقہ بندیوں سے متعلق معاملہ واپس الیکشن کمیشن کو بھجوا دیا۔واضح رہے کہ سندھ میں صوبائی حلقے پی ایس 7، 8 اور 9 شکارپور کی حلقہ بندیاں سپریم کورٹ میں چیلنج کی گئی تھیں۔

مزید پڑھیں:  ویمنز ایشیا کپ 2024 ، پاکستان کو بھارت کے ہاتھوں 7 وکٹوں سے شکست