الیکشن کمیشن نگران حکومتیں

نگران حکومتیں انتخابات میں خلل ڈالنے کی کوشش نہ کریں، الیکشن کمیشن

ویب ڈیسک: الیکشن کمیشن آف پاکستان نے نگران وزیراعظم اور نگران وزرائےاعلٰی کو انتخابات کے انعقاد کے حوالے سے مراسلہ جاری کر دیا جس میں ہر سیاسی جماعت کو لیول پلیئنگ فلیڈ دینے کی ہدایت کی گئی ہے۔ سیکرٹری الیکشن کمیشن نے نگران وزیراعظم، نگران وزرائےاعلٰی سندھ، بلوچستان کو مراسلہ جاری کیا جس میں اہم ہدایات جاری کی گئی ہیں۔
مراسلے میں کہا گیا ہے کہ قومی اسمبلی، سندھ اور بلوچستان اسمبلیاں تحلیل ہو چکی ہیں، جس کے بعد صاف شفاف اور بروقت انتخابات کا انعقاد الیکشن کمیشن کی آئینی ذمہ داری ہے، اس حوالے سے الیکشن کمیشن نے آئینی اقدامات اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔ مراسلے میں نگران حکومتوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ الیکشن کے انعقاد کے لئے بہترین ماحول فراہم کیا جائے اور ہر سیاسی پارٹی کو لیول پلینگ فیلڈ دی جائے، نگران حکومتیں صاف شفاف اور بروقت انتخابات کے لئے الیکشن کمیشن کی معاونت یقینی بنائیں اور انتخابات میں خلل ڈالنے کی کوشش نہ کریں۔
سیکرٹری نے مراسلے میں ہدایت کی کہ الیکشن کمیشن کی پیشگی اجازت کے بغیر تقرر و تبادلے نہ کئے جائیں جبکہ وفاقی اور صوبائی و مقامی اداروں میں ہر قسم کی بھرتی پر عائد پابندی پر عمل کیا جائے۔ مراسلے میں کہا گیا ہے کہ الیکشن کمیشن نے وفاقی اور صوبائی حکومتوں پر ہر قسم کی ترقیاتی سکیموں پر پابندی عائد کر دی ہے جبکہ اداروں میں بھرتی ہونے والی سیاسی شخصیات کی ملازمت ختم کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ الیکشن کمیشن نے سابق وزیراعظم، وزرائے اعلٰی، کابینہ ارکان، مشیروں اور ممبران اسمبلی سے سرکاری رہائش گاہیں فوری خالی کرانے اور کابینہ ارکان سے سرکاری گاڑیاں واپس لینے کی بھی ہدایت کردی۔
سیکرٹری الیکشن کمیشن نے کہا کہ وفاقی اور صوبائی نگران حکومتیں قانون کے مطابق روزانہ کی بنیاد پر معاملات چلائیں۔ مراسلے میں واضح کیا گیا ہے کہ نگران حکومتیں پہلے سے جاری بین الاقوامی اور دو طرفہ معاہدوں پر عملدرآمد کروا سکتی ہیں۔ علاوہ ازیں مراسلے میں الیکشن کمیشن نے نگران وزیراعظم، وزرائےاعلی اور کابینہ ارکان سے اثاثوں کی تفصیلات 3 روز میں طلب کر لیں۔

مزید پڑھیں:  چیئرمین پی ٹی آئی بیرسٹر گوہر اور روف حسن گرفتار