90 روز میں انتخابات

90 روز میں انتخابات، عدالت عظمیٰ میں درخواست دائر، قریشی کا نگران وزیراعظم کو خط

ویب ڈیسک: عام انتخابات 90 روز میں کرانے کیلئے سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن نے عدالت عظمیٰ میں درخواست دائر کردی جبکہ ڈپٹی چیئرمین پی ٹی آئی نے نگران وزیراعظم کو خط لکھ دیا۔ سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر عابد شاہد زبیری نے آئین کے آرٹیکل 184/3 کے تحت دائر درخواست میں عام انتخابات 90 روز میں کرانے اور نئی حلقہ بندیوں کے تحت انتخابات کرانے کا مشترکہ مفادات کونسل کا فیصلہ چیلنج کر دیا ہے۔ درخواست میں عدالت عظمیٰ سے استدعا کی گئی ہے کہ نئی مردم شماری کے تحت انتخابات کا فیصلہ کالعدم قرار دیا جائے اور الیکشن کمیشن کو فوری طور پر انتخابات کی تاریخ کے اعلان کا حکم دیا جائے۔ درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ آئین کا آرٹیکل 224 کی شق 2 الیکشن کمیشن کو انتخابات 90 دنوں کے اندر کرانے کا پابند کرتی ہے۔ سپریم کورٹ بارایسوسی ایشن نے استدعا کی کہ عدالت قرار دے کہ الیکشن کمیشن کسی صورت انتخابات 90 دنوں سے آگے نہیں بڑھا سکتا۔ دوسری جانب 90 روز کی آئینی مدت میں انتخابات کے انعقاد کے معاملے پر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ کو خط لکھ دیا۔ خط میں پاکستان کے نگران وزیراعظم کا عہدہ سنبھالنے پر انوار الحق کاکڑ کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ سابق حکمرانوں نے تحریک انصاف کو انتخابی دوڑ سے باہر کرنے کی نیت سے ریاستی اداروں کا بے دریغ استعمال کیا، چیئرمین تحریک انصاف کو اٹک جیل میں نہایت ناگفتہ بہہ اور انسانیت سوز حالات میں رکھا گیا ہے، انہیں آئین اور جیل قواعد کے مطابق بنیادی حقوق کی فراہمی کے لیے فوری اقدامات کیے جائیں۔
پی ٹی آئی کی جانب سے لکھے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ تحریک انصاف کے 10 ہزار سے زائد کارکنان پابند سلاسل ہیں، عدالتوں کے آئینی احکامات کی پیہم توہین جاری ہے، دستور اسمبلی کی قبل از وقت تحلیل کی صورت میں 90 روز میں انتخابات کے انعقاد کا حکم دیتا ہے لہذٰا ہمارا پراصرار مطالبہ ہے کہ آپ انتخابات کے بروقت انعقاد کو یقینی بنائیں۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ مشترکہ مفادات کونسل کی جانب سے مردم شماری کے نتائج کی تاخیر سے منظوری کے بعد نئی حلقہ بندیوں کے معاملے کو انتخابات میں التواء کا بہانہ ہرگز نہیں بنایا جا سکتا، ہم مشترکہ مفادات کونسل کے فیصلے کو عدالت میں چیلنج کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

مزید پڑھیں:  مسقط میں مسجد کے قریب فائرنگ ،4افراد جاں بحق