بیج اور کھاد

بیج اور کھاد مہنگی، کسانوں نے فصلیں بونا چھوڑ دیا

ویب ڈیسک: بیج اور کھاد کی قیمتوں میں اضافہ اور پانی کی قلت کی وجہ سے کئی زرعی اضلاع میں کاشت کاروں نے مختلف فصلوں کو کاشت کرنا چھوڑ دیا ہے جس سے آئندہ سال کیلئے پیداوار کم ہونے کا اندیشہ ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ بیج اور کھادوں کی بڑھتی قیمتوں نے پشاور، مردان، لکی مروت، چارسدہ، صوابی، بنوں، بونیر اور ہری پور میں کاشت کاروں کیلئے مسائل پیدا کئے ہیں اور مختلف قسم کی فصلوں بشمول گندم کی کاشت میں امسال کمی کا اندیشہ ہے۔
اس سلسلے میں کاشت کار ایسوسی ایشن کے رہنما ارباب جمیل نے بتایا کہ پشاور کے اردگرد علاقوں میں چھوٹے کسانوں کیلئے کاشت کاری مشکل ہوگئی ہے نہری نظام بھی خشک ہوگیا ہے جس کی وجہ سے چارسدہ روڈ اور کوہاٹ روڈ پر زمینیں خشک سالی کا شکار اور لوگ ان کو بیچنے کی طرف جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کھاد کی قیمتیں بھی کنٹرول میں نہیں، گزشتہ سال جو کھاد اٹھارہ سو روپے میں تھی۔
اس کی قیمت تقریبا 10 ہزار روپے ہوگئی ہے۔ ڈیزل اور پیٹرول کی قیمتیں بڑھنے کے باعث ٹریکٹر چلانا بھی چھوٹے کاشت کاروں کیلئے ممکن نہیں رہا۔

مزید پڑھیں:  ٹانک سے سراغ رساں ٹیم کے 5اہلکاروں کو اغوا کر لیا گیا