حسان نیازی کیس نوٹس

حسان نیازی کیس، 21 اگست کیلئے فریقین کو نوٹس جاری

ویب ڈیسک: جناح ہاؤس حملہ کیس میں نامزد چیئرمین تحریک انصاف کے بھانجے حسان نیازی کی بازیابی کے لیے لاہور ہائی کورٹ میں درخواست کی سماعت ہوئی۔ جسٹس سلطان تنویر احمد نے حسان نیازی کے والد حفیظ اللہ نیازی کی درخواست پر سماعت کی، حفیظ اللہ نیازی نے بیٹے کی بازیابی کے لیے لاہور ہائی کورٹ میں حبس بے جا کی درخواست دائر کی ہے۔ درخواست گزار نے حسان نیازی کو بازیاب کر کے پیش کرنے کی استدعا کی ہے، وکیل درخواست گزار نے استدعا کی کہ حسان نیازی کی والدین سے ملاقات کرانےکا حکم دیا جائے۔ عدالت نےکہا کہ لاء افسر بتائیں ان کی ملاقات کب کرائی جاسکتی ہے؟
ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے بتایا کہ اس حوالے سے طریقہ کار کیا ہے اور قواعد کیا ہیں پتہ کر کے بتا سکتا ہوں، عدالت نے ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل کو طریقہ کار کی وضاحت کے لیے مہلت دے دی۔ ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے عدالت کو بتایا کہ حسان نیازی کا کیس ملٹری کورٹ میں چلایا جائے گا، پولیس نے حسان نیازی کو آرمی کے حوالے کر دیا ہے۔ عدالت میں جمع کروائی گئی رپورٹ کے مطابق حسان نیازی جناح ہاؤس حملہ کیس کے مرکزی ملزمان میں شامل ہیں، ملزم کو خیبرپختونخوا سے گرفتار کیا گیا ہے۔ دوسری جانب حسان نیازی کو گرفتاری کے باوجود عدالت میں پیش نہ کیے جانے کے خلاف پشاور ہائی کورٹ نے 21 اگست کے لیے فریقین کو نوٹس جاری کر دیے۔

مزید پڑھیں:  ہر 5 میں سے 1 فرد تنہائی کا شکار ہے، سروے