شاہ محمود قریشی جسمانی ریمانڈ

سائفر کیس: شاہ محمود قریشی 4 روزہ جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے

آفیشل سیکریٹ ایکٹ کے تحت قائم ملک کی پہلی سپیشل عدالت نے سائفر کیس میں وائس چیئرمین پاکستان تحریک انصاف شاہ محمود کا 4 روز کا جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا۔
ویب ڈیسک: تفصیلات کے مطابق انسداد دہشت گردی عدالت نمبر ایک کے جج ابوالحسنات محمد ذوالقرنین کو خصوصی عدالت کا جج مقرر کیا گیا ہے جو آفیشل سیکرٹ ایکٹ کے تحت درج کیے گئے مقدمات کی سماعت کریں گے۔
انسداد دہشت گردی عدالت نے تصدیق کی ہے کہ آفیشل سیکرٹ ایکٹ کے تحت ملک بھر میں صرف ایک ہی عدالت قائم کی گئی ہے، آفیشل سیکرٹ ایکٹ کے تحت اسی عدالت میں ان کیمرا پروسیڈنگز ہوں گی۔
دریں اثنا عدالت میں آج پہلا مقدمہ سنا گیا، جس میں تحریک انصاف کے رہنما شاہ محمود قریشی کو سائفر کیس میں عدالت میں پیش کیا گیا۔ ان پر آفیشل سیکریٹ ایکٹ کے تحت سائفر گمشدگی کا مقدمہ درج ہے۔
جج ابوالحسنات ذوالقرنین نے شاہ محمود قریشی کے خلاف ان کیمرا سماعت کی، اس دوران کمرۂ عدالت میں موجود غیر متعلقہ افراد کو باہر نکال دیا گیا، عدالت کے باہر پولیس کی نفری تعینات کر دی گئی۔
ایف آئی اے کی جانب سے شاہ محمود قریشی کے تیرہ روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی گئی جس پرعدالت نے چار روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا۔
عدالت نے انہیں ایف آئی اے کے حوالے کرتے ہوئے 25 اگست کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا۔

مزید پڑھیں:  شوکت یوسفزئی کا نام ای سی ایل سے نکالا جائے، پشاور ہائیکورٹ