نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ

کوئی معاشرہ عدل و انصاف کے بغیر قائم نہیں رہ سکتا، نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ

ویب ڈیسک: جڑانوالہ میں مسیحی برادری سے اظہار یکجہتی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ نے کہا کہ انتہا پسندی کا کسی مذہب، زبان یا علاقے سے کوئی تعلق نہیں، جڑانوالہ واقعے کا بہت دکھ ہے، ان کا کہنا تھا کہ اقلیتی برادری کے تحفظ پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ نگران وزیراعظم نے مسیحی برادری سے اظہار یکجہتی کے لیے جڑانوالہ کا دورہ کیا، اس موقع پر ان کا مزید کہنا تھا کہ جڑانوالہ واقعہ ہمارے ہاں موجود پُرتشدد روئیوں کی بیماری کی نشاندہی کرتی ہے، انہوں نے کہا کہ ہر شہری کا تحفظ یقینی بنانا حکومت کی ذمہ داری ہے، کوئی بھی معاشرہ عدل و انصاف کے بغیر قائم نہیں رہ سکتا، جب سب کو یکساں انصاف ملتا ہے تو مملکت بھی قائم رہتی ہے، مملکت کے دشمنوں کا پہلا وار انصاف کے سسٹم پر ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان بنانے میں مسیحی برادری کا اہم کردار ہے، دشمن کان کھول کر سن لے ہم ملزمان کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کریں گے۔
انوار الحق کاکڑ نے کہا کہ اقلیتی برادری کو یورپ، امریکا میں بھی ٹارگٹ کیا جا رہا ہے، بطور امتی ہم مسیحی بھائیوں کی حفاظت کے ذمہ دار ہیں، ایسا کرنے والے انسانیت کے دشمن ہیں، ہمارا رویہ ہمارے ایکشن سے نظر آئے گا۔ نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ جڑانوالہ میں گرجا گھر بھی گئے، نگران وزیراعظم نے گرجا گھروں کی ازسر نو تعمیر کی پیش رفت کا جائزہ لیا۔

مزید پڑھیں:  خیبر پختونخوا لہولہان،وزیردفاع زخموں پر نمک چھڑک رہے ہیں : بیرسٹر سیف