چینی اور آٹا

چینی اور آٹا بھی مہنگے، نئے نرخوں نے شہریوں کو جھنجھوڑ دیا

ویب ڈیسک: بجلی کے مہنگے بلوں کی بھاری ادائیگی کے سبب پہلے سے مشکلات کے شکار صارفین کو چینی اور آٹا کی قیمتوں میں ایک بار پھر اضافے نے مزید جھنجھوڑ کر رکھ دیا ہے۔ نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق نگران حکومت کے اقتدار سنبھالنے کے صرف 2 روز بعد ہی چینی کی ہول سیل قیمت میں 8 روپے فی کلو اضافہ ہو گیا جس کے بعد چینی کی قیمت 153 روپے فی کلو تک پہنچ گئی، اس طرح آن لائن اسٹورز پر چینی 160 روپے فی کلو سے 170 روپے فی کلو تک فروخت ہونے لگی۔
گزشتہ روز ہول سیلرز نے چینی مزید 4 روپے فی کلو مہنگی کر کے 157 روپے فی کلو تک پہنچا دی، اسی طرح ریٹیل مارکیٹ میں چینی کی قیمت 170 روپے فی کلو تک بڑھ گئی ہے۔ آن لائن اسٹورز پر اب چینی کی قیمت 172 روپے فی کلو ہوگئی ہے جبکہ کچھ اسٹورز چینی کا 500 گرام والا پائوچ 95 روپے میں فروخت کر رہے ہیں، یعنی 2 پائوچ یا ایک کلو چینی کی قیمت 190 روپے فی کلو ہوگئی۔ مختلف شہروں میں گزشتہ روز چینی کی اوسط قومی قیمت 155 سے 172 روپے فی کلوگرام رہی۔
اس حوالے سے اجناس کے برآمد کنندہ / درآمد کنندہ فیصل انیس مجید نے کہا کہ مقامی چینی غیرقانونی ذرائع سے افغانستان اور ایران بھیجی جارہی ہے۔ ادھر فلور ملرز نے بھی مختلف اقسام کے آٹے کی قیمتوں میں اضافہ کردیا ہے۔ مکس آٹا 142 روپے فی کلو اور فائن آٹا / میدہ 150 روپے فی کلو فروخت ہونے لگا ہے۔ ملک بھر میں 20 کلو گرام آٹے کے تھیلے کی اوسط قیمت اب 2800 سے 3200 روپے کے درمیان ہوچکی ہے جو کہ جولائی 2022 کے پہلے ہفتے میں 980 سے 1940 روپے تھی۔

مزید پڑھیں:  پی ٹی آئی کو وہ ریلیف بھی دیا گیا جو مانگا ہی نہیں گیا تھا، اے این پی