خیبرپختونخوا احتجاج

بجلی بلوں کیخلاف خیبرپختونخوا بھر کے عوام سراپا احتجاج، شٹر ڈاون ہڑتال

ویب ڈیسک: بجلی کے بڑھتے اور مہنگے بلوں کیخلاف خیبرپختونخوا بھر میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔ نوشہرہ، مردان، چارسدہ اور صوابی سمیت دیگر اضلاع میں عوام سڑکوں پر نکل آئے اور احتجاج کرتے ہوئے حکومت کے خلاف بھرپور نعرہ بازی کی گئی۔
نوشہرہ میں بجلی کے بلوں میں اضافے کیخلاف احتجاج میں خواجہ سراؤں نے بھی شرکت کی اور بجلی کے بلوں میں کمی کا مطالبہ کرتے ہوئے پشاور راولپنڈی روڈ ہر قسم ٹریفک کیلئے بند کر دیا۔ مظاہرین نے حکومت اور واپڈا کے خلاف شدید نعرے بازی کرتے ہوئے کہا کہ جب تک ظالمانہ ٹیکس ختم نہیں کیا جاتا بل جمع نہیں کریں گے، مہنگائی کے اس دور میں بجلی کے اضافی بل برداشت سے باہر ہیں۔
ضلع سوات میں بھی بھاری بجلی بلوں نے غریب عوام کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے اور شہری زیادہ بل ادا کرنے سے قاصر ہیں اور عوام کی جانب سے مظاہرے کئے جا رہے ہیں۔
ضلع مالا کنڈ کے عوام کا حکومت سے مطالبہ زور پکڑ رہا ہے کہ اضافی چارجز کم کئے جائیں، بجلی بلوں میں اضافے کے خلاف ضلع ملاکنڈ میں مکمل شٹر ڈاؤن ہڑتال ہے، متحدہ ٹریڈ یونین کی کال پر بٹ خیلہ، درگئی، سخاکوٹ، تھانہ اور طوطہ کان میں کاروباری مراکز بند ہیں۔
رسالپور میں عوام بجلی کے بلوں کے خلاف سراپا احتجاج ہیں، عوام نے مردان نوشہرہ جی ٹی روڈ مکمل طور پر ہر قسم کی ٹریفک کیلئے بلاک کر دیا ہے اور تاجران نے تجارتی مراکز اور دکانیں بند کر رکھی ہیں۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ مہنگائی کے اس دور میں بجلی کے اضافی بل برداشت سے باہر ہیں، اس لئے جب تک ظالمانہ ٹیکس ختم نہیں کیا جاتا بل جمع نہیں کریں گے، حکومت بجلی کی قیمتوں میں فوری کمی کرے تاکہ عوام سکھ کا سانس لے سکیں۔
مردان کے شہری بھی بجلی بلوں میں اضافے اور ٹیکسز کے خلاف سراپا احتجاج ہیں۔ ان کی جانب سے احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا جانے لگا ہے کہ مہنگائی کے اس دور میں جہاں اور دیگر ضروریات پوری کرنا عوام کے بس سے باہر ہے وہاں بھاری بجلی بل ادا کرنا کیسے ان کیلئے ممکن ہو سکے گا۔

مزید پڑھیں:  بنگلہ دیش میں کوٹہ سسٹم کیخلاف طلبہ کا احتجاج شدید، فوج طلب