بلڈنگ میٹریل

بلڈنگ میٹریل مہنگا، عام آدمی کا گھر بنانے کا خواب چکنا چور

سیمنٹ، بجری، ریت، اینٹ کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ، بلڈنگ میٹریل ڈیلرز مافیا کا روپ دھا ر چکے ہیں۔ سیمنٹ فی بوری 1200 روپے جبکہ اینٹ فی ہزار 15000 روپے تک جا پہنچی، عام آدمی کا گھر بنانے کا خواب ادھورا رہ گیا۔
ویب ڈیسک: حکومت کی جانب سے بلڈنگ میٹریل کی قیمتیں کنٹرول نہ ہونے سے تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہیں۔ تعمیراتی میٹریل کی قیمتوں میں اضافے کے بعد عام آدمی کا گھر بنانے کا خواب ادھورا ہو کر رہ گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق مہنگائی میں ہوشربا اضافے کی وجہ سے سیمنٹ کی بوری 1200روپے، سریا 270 روپے فی کلو، اینٹ فی ہزار 15000 روپے، بجری 125 روپے، فی فٹ ریت کا ٹرالا 18000 روپے کا ہو جانے سے غریب آدمی کا مکان بنانے اور چھت کا حصول ناگزیر ہو چکا ہے۔
بلڈنگ میٹریل کی بڑھتی قیمتوں کے پیش نظر لوگوں نے اپنے تعمیراتی کام رکوا دئیے ہیں جس سے مزدور کار طبقہ بے روزگار ہو گیا ہے جبکہ دوسری طرف مزدور نے اپنی دیہاڑی میں بھی اضافہ کر دیا ہے اور راج گیر، مستری بھی منہ مانگی اجرت طلب کر رہے ہیں۔
پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا بہانہ بنا کر مقامی سیمنٹ ڈیلرز نے 1200 روپے فی بوری ریٹ مقرر کر دیا ہے، سیمنٹ کی قیمتوں میں ہوشرباء اضافہ سے جہاں تعمیراتی کام بند ہوئے ہیں وہاں مزدوروں کی ایک بہت بڑی تعداد بھی بے روزگاری کا شکار ہو کر رہ گئی ہے۔

مزید پڑھیں:  پیرو :مسافر بس کھائی میں گرنے سے 23افراد ہلاک