سندھ بجٹ، تنخواہوں میں اضافہ، محکمہ تعلیم کیلئے32ارب روپے مختص

خیبرپختونخوا، وفاق اور پنجاب کے بعد آج سندھ کا 3 ہزار ارب سے زائد حجم کا آئندہ مالی سال کا بجٹ پیش کیا جا رہا ہے.
ویب ڈیسک: سپیکر اویس قادر شاہ کی صدارت میں سندھ بجٹ اجلاس منعقد ہوا وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ مالی سال 25-2024 کا 30کھرب روپے سے زائد تخمینے کا بجٹ پیش کر رہے ہیں۔
یاد رہے کہ وزیراعلیٰ سندھ بجٹ قومی زبان کی بجائے انگریزی زبان میں پیش کر رہے ہیں۔
سندھ بجٹ کے حوالے سے جاری دستاویز میں بتایا گیا ہے کہ سندھ کا مجموعی ترقیاتی بجٹ 959 ارب روپے ہوگا۔ ان میں جاری ترقیاتی سکیمز بھی شامل ہیں۔
سرکاری ملازمین کے حوالے سے وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ تنخواہوں میں 22 سے30 فیصد اضافہ کیا گیا ہے۔
بجٹ تقریر میں انہوں نے صوبائی بجٹ میں 32 ارب محمکہ تعلیم اور 18 ارب روپے صحت جبکہ محکمہ توانائی کے ترقیاتی منصوبوں کیلئے 3 ارب روپے مختص کیے۔
یاد رہے کہ اس سے قبل سندھ کابینہ 30 کھرب روپے سے زائد کی بجٹ تجاویز کی منظوری دے چکی ہے۔
سندھ بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 30 فیصد تک اضافے کا امکان ہے۔
ذرائع کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت ہونے والے کابینہ کے پری بجٹ اجلاس میں صوبائی وزراء، مشیران، چیف سیکرٹری، چیئرمین پی اینڈ ڈی، سیکرٹری خزانہ اور دیگر متعلقہ افسران شریک ہوئے تھے۔

مزید پڑھیں:  امام حسین کی شہادت باطل کیخلاف ڈٹ جانے کا درس دیتی ہے: وزیراعظم