عمر ایوب

عمران خان کو جیل میں کسی قسم کی سہولتیں میسر نہیں ،عمر ایوب

ویب ڈیسک: قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور پی ٹی آئی کے مرکزی رہنماء عمر ایوب نے کہا ہے کہ بانی پی ٹی آئی عمران خان کو جیل میں نوازشریف اور آصف زرداری جیسی سہولتیں میسر نہیں ،صرف ایک چھوٹا سا کمرہ دیا گیا ہے ۔
میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر عمر ایوب کا کہنا تھا کہ بانی تحریک انصاف کی آدھا گھنٹہ بمشکل 6 لوگوں ملاقات کروائی جاتی ہے جبکہ بیٹوں کے ساتھ مہینوں میں کہی ایک بار تھوڑی سے بات کرنے کا موقع دیا جاتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ نے کہا کہ آئی جی جیل خانہ جات وہ مسلم لیگ ن کا آدمی ہے جبکہ جیل سپرٹنڈنٹ اسد وڑائچ میں جانبداری کا مظاہرہ کر رہا ہے،معاملے پر آئی پنجاب کو بھی پارلیمنٹ بلا کر جواب لیا جائے گا۔
عمر ایوب نے کہا کہ حکومت نے بجٹ کے ٹیکسیشن تفصیلات اب تک ہمیں نہیں بتائی، پی ڈی ایم ٹو حکومت نے ملک کی عوام برباد کر دیا بجٹ جو پیش کیا گیا اس کی کاپیاں ہی پہلے نہیں دی گئیں، تو ہمیں کیسے پتہ چلتا کہ بجٹ میں کیا کچھ پیش کیا جارہا ہے، ان کے بجٹ میں یہ کونسا طریقہ ہے کہ غریب پر سمز بند کر رہے ہیں۔
عمر ایوب نے مزید کہا کہ پولیس ، میلٹری ، ایف سی ، سب ریاست کے ٹولز ہیں، ہم سب اسی طرح ریاست کا حصہ ہیں آپ راستہ نہیں روک سکتے۔
اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ بانی پی ٹی آئی کا ایک ہی مطالبہ ہے کہ پارٹی قیاد کے خلاف کیسز ختم کیے جائیں جبکہ صنم جاوید، یاسمین راشد سمیت دیگر قائدین کو رہا کیا جائے۔
ان کا کہنا تھا کہ جیل سے باہر نکلتے ہیں پی ٹی آئی قائدیں اور کارکن دوبارہ گرفتار ہو جاتے ہیں، جج صاحان کو فیصلے لکھنے سے روکا جاتا ہے، جس ملک میں ائین و قانون کے مطابق فیصلے نہ ہو وہ کبھی ترقی نہیں کرتا۔

مزید پڑھیں:  پاکستان اور بنگلہ دیش کے انتخابات شفاف نہیں تھے، لارڈ حنان