طاہر اشرفی

سوات میں قرآن کریم کا نام لے کر انسان کو جلا دیا گیا،طاہر اشرفی

ویب ڈیسک: پاکستان علما کونسل کے سربراہ علامہ طاہر اشرفی نے کہا ہے کہ سوات میں قرآن کریم کا نام لے کر ایک انسان کو جلا دیا گیا،خود ہی منصف اور مدعی بننے کا سلسلہ ختم ہونا چاہیے۔
لاہور پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے علامہ طاہر اشرفی کا کہنا تھا کہ جس نے ایک انسان کو قتل کیا اس نے پوری انسانیت کو قتل کیا، قرآن رحمت ہی رحمت ہے،قرآن عدل کا حکم دیتا ہے۔
کسی کو یہ حق نہیں دیا جاسکتا کہ خود ہی الزام لگائے اور خود ہی جلاد بن جائے، لاہور میں جوزف کالونی جلادی گئی تھی پھر تمام مجرمان بری ہوگئے ، ایسے واقعات اسلام اور پاکستان کو بدنام کرتے ہیں۔
علامہ طاہر اشرفی کا کہنا تھا کہ تمام مجرم سامنے ہیں ان کو سزا نہیں ہوتی، یہ اتنا لمبا پراسیس ہے کہ وہ پھر ہیرو بن جاتے ہیں، چیف جسٹس ایک ہفتے کیلئے وی وی آئی پیز اور سیاسی مقدمات کو ایک طرف رکھ دیں، توہین مذہب اور ناموس رسالت کے مقدمات میں گناہ گاروں کو سزا دیں اور جو بے گناہ ہیں ان کو رہا کیا جائے۔
انہوں نے مزید کہا کہ کل وزیراعظم کی سربراہی میں ہونے والی میٹنگ میں فیصلہ کیا گیا کہ عزم استحکام کے نام سے ایک آپریشن لانچ کیا جائے گا۔
طاہر اشرفی کا کہنا تھا کہ یہ آپریشن انتہا پسندی،بڑھتے تشددکے خلاف ہونا چاہیے، تمام سیاسی و مذہبی جماعتیں سر جوڑ کر بیٹھیں، میرے ملک کے نوجوانوں کو رہنمائی کی ضرورت ہے۔

مزید پڑھیں:  عمران خان کی ممکنہ گرفتاری فوج کو دینے کیخلاف درخواست دائر