خیبرپختونخوا کابینہ

خیبرپختونخوا کابینہ:9مئی واقعات کی تحقیقات کیلئےجوڈیشل کمیشن بنانےکی منظوری

ویب ڈیسک: خیبرپختونخوا کی کابینہ کی جانب سے 9مئی کو صوبے میں ہونے والے واقعات کی تحقیقات کے لئے جوڈیشل کمیشن بنانے کی منظوری دے دی گئی ۔
وزیراعلیٰ علی امین گنڈا پور کی زیر صدارت خیبرپختونخوا کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں صوبائی کابینہ نے 9مئی کے واقعات کی تحقیقات کے لیے جوڈیشل کمیشن بنانے کی منظوری دے دی۔
کابینہ نے ڈی آئی خان کی سب ڈویژن کلاچی میں پولیس کے لئے 565 آسامیوں کی تخلیق کی منظوری بھی دے دی،نئی آسامیوں میں 5سب انسپکٹرز، 10اسسٹنٹ سب انسپکٹرز، 50 ہیڈ کانسٹیبلز اور 500 کانسٹیبلز شامل ہیں۔
کابینہ اجلاس میں بتایا گیا کہ نئی آسامیوں کی تخلیق پولیس کو مستحکم کرنے کی پالیسی اور امن و امان کی بہتری کے لئے کیا گیا۔
صوبائی کابینہ نے پشاور، سوات، اور ایبٹ آباد کے طرز پر دیگر ڈیویژنل ہیڈ کوارٹرز میں ٹریفک وارڈن نظام متعارف کرانے کی بھی منظوری دی، ٹریفک وارڈن سسٹم کے لیے 1,179 پوسٹوں کی تخلیق کی جائے گی ۔
آسامیوں میں سپرنٹنڈنٹ پولیس، ٹریفک آفیسر، سینئر وارڈن، وارڈن، ہیڈ کانسٹیبل، اور جونیئر پیٹرولنگ آفیسر شامل ہیں۔
کابینہ اجلاس کے دوران کیڈٹ کالج رزمک، کیڈٹ کالج سپینکئی اور کیڈٹ کالج وانا کے لئے 319.627 ملین روپے کے اضافی فنڈ کی منظوری بھی دے دی گئی جبکہ اسلام آباد اور ایبٹ آباد میں خیبر پختونخوا ہاؤسز اور پشاور میں شاہی مہمان خانہ کے کرایوں میں 100فیصد اضافہ کی منظوری بھی دے دی گئی ہے ۔
کابینہ نے 53کلومیٹر ‘بورڈ یختنگی-پورن-مارتونگ سڑک اور 18کلو میٹر کالام اتروڑ گبرال سڑک کو صوبائی اختیار میں لانے کی منظوری بھی دے دی ۔

مزید پڑھیں:  عوام کے لئے یوٹیلٹی اسٹورز پرسبسڈی میں اضافے کی تجویز