فلسطینی طلبہ شہید

غزہ : اسرائیلی حملوں میں 8ہزار سے زائد فلسطینی طلبہ شہید

ویب ڈیسک: غزہ میں7اکتوبر سے جاری اسرائیلی جارحیت اور حملوں کے نتیجے میں اب تک 8ہزار سے سے زائد فلسطینی طلبہ اور 497اساتذہ شہید ہوچکے ہیں۔
غزہ میں 350سے زائد سرکاری تعلیمی اداروں اور اقوام متحدہ کے ادارے (UNRWA)کے تحت چلنے والے 65 سکولوں پر اسرائیلی فوج کی جانب سے حملے کیے گئے اور انہیں تباہ کردیا گیا۔
رپورٹ کے مطابق اسرائیلی حملوں کے نتیجے میں غزہ میں کم از کم 8572اور مقبوضہ مغربی کنارے میں 100 طلبہ شہید ہوچکے ہیں۔
رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اسرائیلی حملوں کے نتیجے میں 497اساتذہ اور اسٹاف ممبر بھی شہید ہوئے جبکہ 3000ہزار سے زائد زخمی ہوئے۔
رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ 7 اکتوبر کے بعد سے اب تک 6 لاکھ سے زائد طالب علم اسکولوں سے باہر ہیں جب کہ زیادہ تر طالب علم نفسیاتی صدمے کا شکار ہیں۔
دوسری جانب اسرائیل کی قید سے واپس آنے والے افراد نے اپنے اوپر ہونے والے ہولناک جسمانی اور ذہنی تشدد کی داستانیں سنائیں۔
اسرائیلی قید سے رہا ہونے والوں میں شامل غزہ کے الشفا ہسپتال کے ڈائریکٹر محمد ابو سلمیہ کا بتانا ہے کہ اسرائیل کی قید میں موجود فلسطینیوں کو روزانہ کی بنیاد پر بدسلوکی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔
انہوں نے مزید بتایا کہ قید کے دوران پوچھ گچھ کے لیے لے جائے گئے بیشتر فلسطینیوں کو مار دیا جاتا ہے۔

مزید پڑھیں:  صوابی میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے بیٹی جاں بحق، باپ بیٹا زخمی