بابائے خدمت عبدالستار ایدھی

بابائے خدمت عبدالستار ایدھی کو عوام سے بچھڑے 8 برس بیت گئے

ویب ڈیسک: بابائے خدمت عبدالستار ایدھی کو عوام سے بچھڑے 8 برس بیت گئے۔ ایدھی 28ء فروری 1928ء کو بھارت کی ریاست گجرات کے شہر بانٹوا میں پیدا ہوئے اور تقسیم ہند کے بعد خاندان سمیت پاکستان آکر کراچی میں آباد ہو گئے۔
بابائے خدمت عبدالستار ایدھی نے عوامی خدمات کا آغاز 1951ء میں ایک ڈسپنسری سے کیا ، اس کے بعد ایدھی ٹرسٹ قائم کیا اور اپنی زندگی کے 65 برس دکھی انسانیت کی خدمت میں وقف کر دیئے۔
انہوں نے بلاتفریق عوام کی بے لوث خدمت کی اور اپنی پوری زندگی انسانیت کی فلاح و بہبود اور ان کا ساتھ دینے میں وقف کردی۔ اپنی لازوال خدمتوں کے بعد ایدھی اپنے انتقل کے بعد بھی ایک ایسا ادارہ چھوڑ گئے جو انہی کی دی گئی گائیڈ لائن پر کاربند آج بھی انسانیت کی فلاح کیلئے کام کر رہا ہے۔
بابائے خدمت عبدالستار ایدھی کے اہل خانہ اور ایدھی فاؤنڈیشن کے کارکنان ان کے انتقال کے بعد بھی ان کا مشن جاری رکھے ہوئے ہیں۔ آج ملک کے کونے کونے میں ایدھی فاؤنڈیشن کے تحت ٹرسٹ کے کلینک، پناہ گاہیں، بزرگوں اور عورتوں کیلئے گھر اور ایسے ہی بے شمار منصوبے جاری ہیں۔
خدمت کے پیکر عبدالستار کو حکومت پاکستان نے 1989ء میں اعلیٰ ترین سول ایوارڈز میں سے ایک نشانِ امتیاز سے نوازا، گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈز میں بھی ان کا نام دنیا کی سب سے بڑی ایمبولینس سروس چلانے کے باعث شامل ہے۔
ملک کے عوام کی خدمت کے جذبے سے سرشار یہ درخشندہ باب 8 جولائی 2016ء کو کراچی میں بند ہو گیا۔ گردوں کے عارضے میں مبتلا عبدالستار ایدھی 88 برس کی عمر میں چل بسے۔
یاد رہے کہ ان کی خدمات کے اعتراف میں انہیں مکمل سرکاری اعزاز کیساتھ سپرد خاک کیا گیا۔
آج بھی دنیا بھر میں غریب اور لاوارث لوگوں کی کفالت میں یہ ادارہ پیش پیش ہے.

مزید پڑھیں:  190ملین پاؤنڈ کیس: اعظم خان کا عدالت میں دیا بیان سامنے آگیا