297 شدت پسند مارے گئے

خیبرپختونخوا میں رواں سال کالعدم ٹی ٹی پی کے 297 شدت پسند مارے گئے

ویب ڈیسک: خیبرپختونخوا میں رواں سال ابتدائی 6 ماہ کے دوران 640 انٹیلی جنس بیسڈ آپریشنز میں کالعدم ٹی ٹی پی کے 297 شدت پسند مارے گئے۔
سیکیورٹی ذرائع کے مطابق ان آپریشنز کے دوران 510 دستی بم، 217 مار ٹرشیل، 34 آئی ای ڈی بم اور 11 ہزار497 ایس ایم جی سیمت دیگر اسلحہ بھی ان شدت پسندوں سے برآمد کیا گیا۔
ذرائع نے اس حوالے سے مزید بتایا ہے کہ رواں سال صوبے کے 13 اضلاع میں انٹیلی جنس بیسڈ آپریشنز کے دوران 297 شدت پسند مارے گئے۔
جنوری میں 41، فروری میں 55 ، مارچ میں 52 شدت پسند ، اپریل اور مئی میں 55 ،55 جبکہ اس کے علاوہ گزشتہ ماہ 39 شدت پسند مارے گئے۔
سیکیورٹی ذرائع کا شدت پسندوں کی ہلاکت کے حوالے سے بتانا ہے کہ شمالی وزیرستان میں سب سے زیادہ 112، ڈیرہ اسماعیل خان میں 46، ٹانک میں 32، لکی مروت میں 30، خیبر میں 24 اور جنوبی وزیرستان میں 18 شدت پسند مارے گئے۔
صوبہ بھر میں ہونے والے ان آپریشنز میں قبائلی ضلع باجوڑ میں 10، پشاور اور بنوں میں 7،7، کرم، کوہاٹ اور سوات میں 3،3 جبکہ مردان میں 2 شدت پسند مارے گئے۔
یاد رہے کہ صوبہ بھر میں ہونے والے ان انٹیلی جنس بیسڈ آپریشنز کے دوران کالعدم ٹی ٹی پی کے 297 دہشتگرد مارے گئے.

مزید پڑھیں:  ملک و قوم کی بقا کیلئے عوامی اتحاد حکومت کے گھٹنے ٹیک دیگی، مفتی محمد تقی