لوکل گورنمنٹ پراپرٹی لیز رولز

لوکل گورنمنٹ پراپرٹی لیز رولز کے مسودے کو حتمی شکل دیدی گئی

لوکل گورنمنٹ پراپرٹی لیز رولز کے مسودے کو حتمی شکل دیدی گئی، صوبے کی آمدن بڑھانے کے لئے محکمہ بلدیات کی جائیدادوں کے مؤثر استعمال کے لئے صوبائی حکومت کا اہم اقدام،
ویب ڈیسک: وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا سردار علی امین گنڈاپور کی زیر صدارت محکمہ لوکل گورنمنٹ کا اہم اجلاس منعقد ہوا جس میں لوکل گورنمنٹ پراپرٹی لیز رولز کے مسودے کو حتمی شکل دیدی گئی۔
اجلاس میں صوبے کی آمدن بڑھانے کے لئے محکمہ بلدیات کی جائیدادوں کے مؤثر استعمال کے لئے اقدامات سمیت محکمے کے موجودہ نظام میں اصلاحات پر بھی تفصیلی غور و خوص کیا گیا۔
اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ لوکل گورنمنٹ پراپرٹی لیز رولز 2024 حتمی منظوری کے لئے کابینہ کو پیش کیے جائیں گے۔ مجوزہ رولز کے تحت بڑے پیمانے پر نجی سرمایہ کاری کے لئے پراپرٹی لیزز کی مدت 99 سال تک بڑھانے کی تجویز بھِی زیرغور ہے۔
اس موقع پر یہ تجویز بھی پیش کی گئی کہ پچاس کروڑ روپے سے زائد کی سرمایہ کاری پر ابتدائی لیز کی مدت 66 سال جبکہ یہ مدت مزید 33 سالوں کے لیے قابل توسیع ہوگی۔
50 کروڑ روپے تک کی سرمایہ کاری پر ابتدائی لیز کی مدت 33 سال ہو گی جو مزید 33 سالوں کے لئے قابل توسیع ہوگی۔ 20 کروڑ روپے تک کی سرمایہ کاری پر بنیادی لیز کی مدت 33 سال تجویز کی گئی ہے جو مزید 15 سالوں تک قابل توسیع ہوگی۔
اس موقع پر مجوزہ رولز میں لیز ہولڈر کی وفات کی صورت میں لیز قانونی وارث کو منتقل کرنے کی تجویز بھی پیش کی گئی ہے۔ اس موقع پر محکمہ بلدیات کی جائیدادوں کو لیز پر دینے کے لئے متعلقہ ڈپٹی کمشنر کی سربراہی میں لیز کمیٹی تشکیل دی جائے گی۔
وزیراعلیٰ سردار علی امین گنڈاپور نے کہا کہ لیزنگ کے لیے ان لائن سسٹم کا نظام متعارف کیا جائے تاکہ بیرون ممالک موجود سرمایہ کار بھی بآسانی مستفید ہو سکیں۔
انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنے سسٹم کو مضبوط اور سرمایہ کاروں کو سہولیات فراہم کرنی ہیں۔ اس اقدام کا حتمی مقصد اپنے وسائل سے بھرپور استفادہ کر کے صوبے کی آمدن میں اضافہ کرنا ہے۔
اجلاس میں صوبے کے تمام اضلاع میں ٹی ایم ایز کی زیر نگرانی فروٹ اینڈ ویجیٹیبل مارکیٹس قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ اس مقصد کیلئے نجی سرمایہ کاروں کی حوصلہ افزائی کی جائے گی۔
وزیراعلیٰ کے زیرصدارت اجلاس میں اس مقصد کے لئے متعلقہ لیگل فریم ورک میں ترامیم کو بھی حتمی شکل دی گئی۔ یہ ترامیم حتمی منظوری کے لئے کابینہ کے اگلے اجلاس میں پیش کی جائیں گی۔
علی امین گنڈاپور نے کہا کہ ہم نے نہ صرف نئی منڈیاں قائم کرنی ہیں بلکہ پہلے سے موجود منڈیوں کو بھی ریگولیٹ کرنا ہے، نئی منڈیوں کے قیام کا مقصد لوگوں کو سہولیات کی فراہمی ہے۔ منڈیاں جتنی زیادہ ہوں گی اسی قدر معیار اور قیمتوں کو استحکام ملے گا۔
وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا نے اجلاس میں کہا کہ یہ منڈیاں ضرورت کی بنیاد پر مناسب مقامات پر قائم کی جائیں۔ اجلاس میں تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن کے جملہ معاملات کو ڈیجیٹائز کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔
وزیراعلیٰ نے محکمہ لوکل گورنمنٹ کی ڈیجٹلائزیشن کے مجوزہ پلان سے بھی اتفاق کیا۔ ڈیجٹلایزیشن پلان میں ای ٹی ایم ایز، انٹگریٹڈ پورٹل، ڈیش بورڈ کا قیام اور ڈیجیٹل پیمنٹس شامل ہیں۔
وزیراعلیٰ کی جانب سے ڈیجیٹائزیشن کے منصوبے پر بلاتاخیر عمل درآمد شروع کرنےکی ہدایت کرتے ہوئے کہا گیا کہ محکمہ کے ملازمین، پراپرٹیز، لیزز، پیمنٹس، ریونیو کولیکشن اور پرفارمنس سمیت تمام امور ڈیش بورڈ پر دستیاب ہونے چاہئیں۔
ان کا کہنا تھا کہ ٹی ایم ایز کی ہر قسم کی ٹرانزیکشنز بینک اکاؤنٹس کے ذریعے یقینی بنائی جائیں، ٹی ایم ایز ورکرز فرنٹ لائن پر کام کرتے ہیں، ہم نے ان کے بارے منفی تاثر کو ختم کرنا ہے۔
وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا سردار علی امین گنڈاپور نے کہا کہ لوکل گورنمنٹ کا سکوپ بہت وسیع ہے، اس کے تمام ذیلی اداروں کو مضبوط بنانا ہو گا۔

مزید پڑھیں:  صحافیوں کو آزادی سے اپنا کام کرنے کی اجازت ہونی چاہیے، ویدانٹ پٹیل