اسلام آباد ہائیکورٹ نے ای کورٹ سسٹم کا آغاز کردیا

اسلام آباد: وکلاء کو دلائل کے لیے سکائپ کی سہولت دے دی گئی، سرکلر جاری ،ای کورٹس کی تمام کاروائی کو قانون شہادت آرڈر 1984ء کا قانونی تحفظ ہوگا، وکلاء کو ای کورٹ سہولت کے لیے درخواست اور سکائپ آئی ڈی دینا ہوگی،

کوئی بھی فریق کسی ڈیوائس کے ذریعے ای کورٹ کی کاروائی کو ریکارڈ نہیں کرسکتا، سرکاری محکمے بھی ای کورٹ سہولت سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں، فوکل پرسن مقرر کریں، ای کورٹ کی تمام کاروائی کی الگ فائل تیار، ہائیکورٹ میں ریکارڈنگ محفوظ ہوگی، ای کورٹ کے کیسز کی الگ فہرست جاری ہوگی۔